ایوان صنعت و تجارت کی فائلرز کی طرف سے بنکوں سے رقم نکلوانے پر ودہولڈنگ ٹیکس اوراضافی ٹیکس میں کمی کی اپیل

بدھ مئی 15:04

ایوان صنعت و تجارت کی فائلرز کی طرف سے بنکوں سے رقم نکلوانے پر ودہولڈنگ ..
فیصل آباد۔9 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) ایوان صنعت و تجارت فیصل آباد نے وزیر اعظم اور وزیر خزانہ سے فائلرز کی طرف سے بنکوں سے رقم نکلوانے پر ودہولڈنگ ٹیکس اوراضافی ٹیکس میں کمی کی اپیل کی ہے جبکہ نئے مالی سال 2018-19ء کے بجٹ کی خامیاں دور ، کمرشل درآمد کنندگان کے مسائل حل اور ٹیکسٹائل سیکٹر کیمیکلز کی درآمد پر ریگولیٹری ڈیوٹی ختم کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے کیونکہ اس کی وجہ سے مصنوعات کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہو رہا ہے اور یہی وجہ ہے کہ انٹر نیشنل مارکیٹس میں جہاں بھارت ، بنگلہ دیش ، چائینہ ، تھائی لینڈ اور دیگر ممالک کی ٹیکسٹائل مصنوعات سستے داموں دستیاب ہیں وہاں پاکستانی برآمد کنندگان ، صنعتکاروں اور تاجروں کو اپنا مال فروخت کرنے میں سخت پریشانی و مشکلات کا سامنا ہے جس کے باعث زرمبادلہ کے حصول اور ایکسپورٹ ٹارگٹس کے حصول میں بھی کمی واقع ہو رہی ہے‘یہ بات ایوان صنعت و تجارت فیصل آباد کے صدر شبیر حسین چاولہ نے وزیر اعظم ہائوس میں منعقدہ ایک اجلاس میں بتائی جس میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ، وفاقی وزیر برائے خزانہ مفتاح اسماعیل، ہارون رشید کامرس اور ٹیکسٹائل کے وفاقی وزیر پرویز ملک اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے چیئرمین طارق محمودپاشا ،وزیرمملکت برائے خزانہ رانا محمدافضل خان بھی موجود تھے‘اس موقع پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے یقین دلایا کہ نئے ٹیکسٹائل ایکسپورٹ پیکج کا اعلان آئندہ چند روز میں کر دیا جائے گا‘ ری فنڈز کلیمزکی ادائیگی کے بارے میں وزیراعظم نے کہا کہ اس مسئلہ کو بھی رواں مہینے میں ہی حل کر لیا جائے گا‘ پنجاب اور دوسرے صوبوں کیلئے الگ الگ گیس ٹیرف کے بارے میں انہوں نے تاجروں سے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں وزیراعلیٰ پنجاب سے بات کریں تاکہ اس فرق کو صوبائی گرانٹ سے کم سے کم کیا جاسکے‘ گیس انفرسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کے بارے میں انہوں نے یقین دلایا کہ اس مسئلے کو بھی فوری طور پر حل کرنے کی کوشش کی جائے گی‘ اس سے قبل ایوان صنعت و تجارت فیصل آباد کے صدر شبیر حسین چاولہ نے بجٹ کی خامیوں کے بارے میں ایک تفصیلی رپورٹ پیش کی اور کہا کہ کمرشل امپورٹرز کے مسائل کو ترجیحی طور پر حل کیا جائے‘ انہوں نے فائلرز کی طرف سے بنکوں سے رقم نکلوانے پر ودہولڈنگ ٹیکس اورا ضافی ٹیکس میں بھی کمی کا مطالبہ کیا‘ انہوں نے مزید کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کیلئے کیمیکلز کی درآمد پر ریگولیٹری ڈیوٹی کو بھی ختم کیا جائے کیونکہ اسکی وجہ سے پیداواری لاگت میں مزید اضافہ ہورہا ہے اور عالمی منڈیوں میں ہماری تجارتی مصنوعات کو سخت مسابقت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے‘اس موقع پراناملی کمیٹی کے دیگرارکان فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز،،کراچی چیمبر،لاہورچیمبر،راولپنڈی چیمبرودیگرکے صدور بھی موجودتھے۔