وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو دھمکیاں موصول ہوئی تھیں

زاہد حامد کا بھی آئندہ الیکشن میں حصہ نہ لینے کا امکان

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین بدھ مئی 14:35

وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو دھمکیاں موصول ہوئی تھیں
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 09 مئی 2018ء) : نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی عارف نظامی نے کہا کہ وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو دھمکیاں موصول ہوئی تھیں۔ میں نے خود احسن اقبال کے لیے دھمکی آمیز تحریریں اور بیانات دیکھے ہیں جن میں ان کو دھمکایا گیا تھا کہ ہم تمہیں کھڑا نہیں ہونے دیں گے، ہم تمہیں آئندہ الیکشن نہیں لڑنے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اس کے بعد اب یہ نہیں معلوم کہ احسن اقبال اپنی جرأت کا کیا ثبوت دیتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اب تو لیگی رہنما زاہد حامد بھی شاید آئندہ عام انتخابات میں حصہ نہ لیں ، ہو سکتا ہے کہ ان کا کوئی بھائی، بیٹا یا کوئی اور عزیز ہو جو اس مرتبہ آئندہ انتخابات میں ان کی جگہ حصہ لے گا۔ عارف نظامی نے کہا کہ سیاستدانوں کو کم از کم آپس میں بیٹھ کو کوڈ آف ایتھکس بنانے چاہئیں، احسن اقبال پر قاتلانہ حملہ ہوا تو عمران خان سمیت تمام سیاستدانوں کی جانب سے اس قاتلانہ حملے کی مذمت کی گئی ، عمران خان کی جانب سے فواد چودھری احسن اقبال کی عیادت کرنے اور ان کو پھول دینے بھی گئے، ان کے ہمراہ اس موقع پر ابرارالحق بھی موجود تھے جو کہ ایک اچھا تاثر تھا۔

(جاری ہے)

سیاستدانوں کو ایک دوسرے کے ساتھ جاگیردارانہ رویہ یا کوئی ذاتی جھگڑا نہیں بنانا چاہئیے ورنہ آئندہ ہفتوں میں الیکشن کا انعقاد مشکل ہو جائے گا۔ خیال رہے کہ 2013ء کے الیکشن سے قبل جب پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان بھی لفٹر سے گر کر زخمی ہوئے تھے تو نواز شریف سمیت تمام سیاستدانوں نے ان کی خیریت دریافت کی اور سیاسی جماعتوں نے اس حادثے کے بعد اپنے جلسے بھی منسوخ کر دئے تھے۔ سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی جانب سے احسن اقبال کو پھولوں کا گلدستہ بھیجا جانا ایک اچھا تاثر ہے اور سیاستدانوں کو چاہئیے کہ وہ ایسی روایات کو برقرار رکھیں۔