دیہی علاقوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا نوٹس لیا جائے اور زرعی شعبے کو مراعات دی جائیں

تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی سرور خان کا بجٹ پر بحث کے دوران اظہار خیال

بدھ مئی 15:39

دیہی علاقوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا نوٹس لیا جائے اور زرعی شعبے کو مراعات ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی سرور خان نے کہا ہے کہ دیہی علاقوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا نوٹس لیا جائے اور زرعی شعبے کو مراعات دی جائیں۔ بدھ کو قومی اسمبلی میں بجٹ 2018-19ء پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے سرور خان نے کہا کہ یہ اسمبلی چھٹے بجٹ کا کریڈٹ لے رہی ہے لیکن لفظوں کے گورکھ دھندے میں جائے بغیر میں کہوں گا کہ یہ ایک روایتی بجٹ تھا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ پاکستان زرعی ملک ہے لیکن بدقسمتی سے اس شعبے کے لئے تمام زر تلافی بتدریج ختم کی جارہی ہیں۔ ہم سبزیاں اور دالیں تک امپورٹ کر رہے ہیں جو افسوسناک ہے۔ انہوں نے بھارت میں زرعی شعبے کے لئے مراعات کا تفصیل سے ذکر کیا اور مطالبہ کیا کہ پاکستانی کسانوں کے لئے بھی اس طرح کی مراعات دی جائیں۔ انہوں نے لوڈشیڈنگ کی صورتحال پر کہا کہ دیہی علاقوں میں 18,18 گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ ہو رہی ہے اس کا نوٹس لیا جائے۔ انہوں نے ڈیموں کی تعمیر کا مطالبہ کیا۔