میرانشاہ ہسپتال میں ڈانس پارٹی ،ْایم ایس معطل

ہسپتال کی حدود میں ڈانس پارٹی ثابت ہونے پر سخت کارروائی کی جائے گی ،ْسرجن ذمہ داروں کے خلاف کارروائی نہ کی گئی تو پشاور میں احتجاج کریں گے ،ْعمائدین

بدھ مئی 16:12

میرانشاہ ہسپتال میں ڈانس پارٹی ،ْایم ایس معطل
میرانشاہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) شمالی وزیرستان کے سب سے بڑے طبی مرکز میرانشاہ ہسپتال میں محفل موسیقی سجانے کے انکشاف کے بعد گورنر خیبر پختونخوا نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ایجنسی سرجن اور ایم ایس کو معطل کر دیا ۔۔شمالی وزیرستان کے ایجنسی ہیڈکوارٹر ہسپتال میران شاہ میں رقص و سرود کی محفل سجائی گئی۔ ایجنسی سرجن محمد یونس نے نوٹس لے کر تحقیقات کا حکم دے دیا ۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایجنسی سرجن کا کہنا تھا کہ انہیں سوشل میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا کہ ہسپتال میں ڈانس پارٹی ہوئی ہے جس سے مریضوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تاہم ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے انکوائری کا حکم دیا ہے کہ محفل موسیقی ہسپتال کی حدود میں منعقد کی گئی تھی یا ہسپتال سے باہر ۔

(جاری ہے)

ایجنسی سرجن کے مطابق ہسپتال کی حدود میں ڈانس پارٹی ثابت ہونے پر سخت کارروائی کی جائے گی۔

میران شاہ اسپتال میں میوزک پروگرام اور ڈانس پارٹی پر قبائلی عمائدین نے اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔عمائدین کے مطابق ذمہ داروں کے خلاف کارروائی نہ کی گئی تو پشاور میں احتجاج کریں گے۔دوسری جانب گورنر اقبال ظفر جھگڑا نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ایجنسی سرجن اور ایم ایس ہسپتال کو معطل کر دیا اور تحقیقاتی رپورٹ جلد پیش کرنے کی ہدایت جاری کردی۔