میٹرو ٹرین کی آزمائشی سروس کیلئے تیاریوں کوتیزی سے حتمی شکل دی جا رہی ہے،خواجہ احمد حسان

بدھ مئی 18:38

میٹرو ٹرین کی آزمائشی سروس کیلئے تیاریوں کوتیزی سے حتمی شکل دی جا رہی ..
لاہور۔9 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) وزیر اعلی پنجاب کے مشیر اور سٹیرنگ کمیٹی کے چیئرمین خواجہ احمد حسان نے کہا ہے کہ میٹرو ٹرین کی آزمائشی سروس کیلئے تیاریوں کوتیزی سے حتمی شکل دی جا رہی ہے جبکہ پیکیج ون میں ڈیرہ گجراں سے محمود بوٹی تک چار سٹیشنوں کے علاوہ نکلسن روڈ اور لکشمی چوک سٹیشنوں کو بھی ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جا رہا ہے، میکلوڈ روڈ پر تعمیر کئے جانے والے اورنج لائن میٹرو ٹرین کے لکشمی چوک سٹیشن کے معائنہ کے دوران گفتگو کرتے ہو ئے انہوں نے کہا کہ اورنج لائن کیلئے پٹری بچھانے کا 70 فیصد کام مکمل کر لیا گیا ہے، ٹرین کی آزمائشی سروس کیلئے تیاریوں کوتیزی سے حتمی شکل دی جا رہی ہے، اس مقصد کیلئے پیکیج ون میں ڈیرہ گجراں سے محمود بوٹی تک چار سٹیشنوں کے علاوہ نکلسن روڈ اور لکشمی چوک سٹیشنوں کو بھی ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جا رہا ہے جبکہ پیکیج ٹو میں علی ٹائون سے سکیم موڑ سٹیشنوں کی تکمیل کا کام تیزی سے جاری ہے، قبل ازیں اورنج لائن منصوبے پر پیش رفت کا جائزہ لینے کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبہ اختتامی مراحل میں داخل ہو چکا ہے ، اسے جلد از جلد مکمل کرنے کیلئے تمام ممکن وسائل اور ذرائع بروئے کار لائے جا رہے ہیں، میٹرو ٹرین کے ٹریک کو آرائشی روشنیوں سے سجانے کیلئے پی ایچ اے بین الاقوامی معیار کے مطابق لائٹنگ سسٹم ڈیزائن کر رہا ہے ، ٹرین بجلی سے چلانے کیلئے انجینئرنگ یونیورسٹی کے قریب الیکٹرک سب سٹیشن کی تعمیر مکمل ہو چکی ہے جسے جلد ہی آپریشنل کر دیاجائیگا، انہوں نے کام کی رفتار اورمعیار پر اطمینان کا اظہار کیا اور اسے جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ، اجلاس کو بتایا گیا کہ مجموعی طور پر منصوبے کا 88 فیصد تعمیراتی کام مکمل ہو چکا ہے ، ڈیرہ گجراں سے چوبرجی تک پیکیج ون کا 94 فیصد‘ چوبرجی سے علی ٹائون تک پیکیج ٹو کا 83 فیصد ‘پیکیج تھری ڈپو کا 89 فیصد جبکہ پیکیج فور سٹیبلینگ یارڈ کی تعمیر کا91 فیصد کام مکمل کیا جا چکا ہے ، اس کے علاوہ منصوبے کا70 فیصد الیکٹریکل ومکینیکل ورکس بھی مکمل کر لیا گیا ہے ، اجلاس کو بتایا گیا کہ جی پی او چوک میں بیرل نمبردو کی کھدائی مکمل ہو نے کے بعد اورنج لائن کاایک سے دوسرے سرے تک 27.1کلومیٹرطویل راستہ بنانے کا کام مکمل کر لیا گیا ہے ، 13.77کلومیٹر طویل پیکیج ون کے 10کلومیٹر حصے پر پٹری بچھا لی گئی ہے جبکہ 13.42کلومیٹرطویل پیکیج ٹو میں سات کلومیٹر طویل حصے پر پٹری بچھائی گئی ہے ، پیکیج ون کے سٹیشنوں پر لگائے جانے والے 77میں سے 75 جبکہ پیکیج ٹو کی80میں سے 56 برقی زینے نصب کئے جا چکے ہیں، اسی طرح پیکیج ون کے سٹیشنوں پر نصب کی جانے والی 48 میںسی45 لفٹیںاور پیکیج ٹوکی 52 میں سے 37 لفٹیں بھی لگائی جا چکی ہیں، میٹر وٹرین کیلئے تمام 27 ٹرین سیٹ در آمد کر لئے گئے ہیں ، 14ٹرین سیٹ ڈیرہ گجراں میں واقع ڈپو جبکہ 13علی ٹائون میں واقع سٹیبلنگ یارڈ میں پارک کئے گئے ہیں ، اجلاس کو بتایاگیا کہ جی پی او چوک ‘ سپریم کورٹ رجسٹری‘ سینٹ اینڈریوز چرچ ‘ شاہ چراغ بلڈنگ ‘ موج دریا کے مزار اور اس کے احاطے میں واقع مسجد کے علاقے میں اورنج لائن میٹرو ٹرین پراجیکٹ پر تعمیراتی کام تیزی سے جاری ہے، مال روڈ سے نابھہ روڈ چوک تک سڑک کی تعمیر مکمل کر کے اسے ٹریفک کیلئے کھول دیا گیا ہے جبکہ جی پی او اور سینٹ اینڈریوز چرچ کی بیرونی دیواروں کی تعمیر کا کام جاری ہے ، اجلاس میںایم پی اے چوہدری شہباز احمد ، لیسکو‘ پی ٹی سی ایل ‘سوئی گیس ‘ ریلوے‘ ٹریفک پولیس ‘سول ڈیفنس‘ریسکیو1122 اور دیگر متعلقہ محکموں کے اعلیٰ افسران کے علاوہ منصوبے کے چینی کنٹریکٹر سی آر نورنکو اور چائنہ انجینئر نگ کنسلٹنس کے نمائندوں اور مقامی کنٹریکٹرز نے شرکت کی

(جاری ہے)