ہائر ایجوکیشن کمیشن کی جانب سے محققین سے ریسرچ پروپوزلز طلب ، جمع کرانے کی آخری تاریخ 30 اگست مقرر

بدھ مئی 19:23

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی )نے ٹیکنالوجی ڈویلپمنٹ فنڈ (ٹی ڈی ایف) کے تحت محققین سے تیسری کال کے ذریعے ریسرچ پروپوزلز طلب کئے ہیں۔ ریسرچ پروپوزلز جمع کرانے کی آخری تاریخ 30 اگست 2018ء ہے ۔ ٹی ڈی ایف 2.91 ارب روپے مالیت کا پانچ سالہ پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام کا منظور شدہ منصوبہ ہے جو انڈسٹری اور تعلیمی اداروں کے مشترکہ پراجیکٹس کی تکمیل اور کمرشلائزیشن میں معاونت کرتا ہے۔

اس پروگرام کی دوسری کال کے تحت محققین کی جانب سے 276پروپوزلز جمع کروائے گئے جس میں سے 25 مختلف انڈسٹریز بشمول زرعی انجینئرنگ، انفارمیشن ٹیکنالوجی،، نینو ٹیکنالوجی ، انڈسٹری سمبیوسز، رینیوول انرجی، مائننگ اور اپلائیڈ انرجی سائنسز ، وغیرہ کے 91پراجیکٹ کی منظوری ہوئی ہے جبکہ پہلی کال کے دوران 116 ریسرچ پراجیکٹس میں سے 16 انڈسٹریزکے 35 پروپوزلز کو منظور کیا گیا تھا ۔

(جاری ہے)

ٹی ڈی ایف ایچ ای سی کا پراجیکٹ ہے جو تعلیمی اداروں سے انڈسٹری کو ٹیکنالوجی کی فراہمی کا عزم لئے حکومت پاکستان کے وژن 2025ء کی تکمیل میں کلیدی کردار ادا کر رہا ہے ۔ اس پراجیکٹ کے تحت محققین کی ریسرچ کو 14ملین روپے کی گرانٹ دی جاتی ہے تاکہ ان تحقیق کو پراڈکٹس کی شکل دی جائے اور کمرشلائز کیا جا سکے، ان کے پیٹنٹ کا حصول ممکن ہو، پروٹو ٹائپ ڈویلپمنٹ ، ابتدائی پراڈکٹ ڈویلپمنٹ ، مارکیٹنگ اور نئے پراڈکٹس کی لائسنسنگ کی جا سکے۔

ٹی ڈی ایف اپنے قیام کے بعد سے ہی انڈسٹری اور تعلیمی اداروں کے مابین روابط کو استوار کرنے میں منہمک ہے اور انڈسٹری کو متحرک کر رہا ہے کہ محققین کی مشاورت سے ریسرچ پروپوزلز جمع کرائے جا سکیں۔ مزید برآں ٹی ڈی ایف نے سازگار انجینئرنگ، اینگرو، فوجی گروپ آف کالجز، شیزان، میٹرو۔۔ حبیب کیش اینڈ کیری ، شفیع ریسو کیمیکل، ٹی سی ایس، کرشی انڈسٹریز، مری بروری ، سٹارکو فینز، سیفران ، پائنیر سیمنٹ، سیزنز فوڈز ، شمع گھی، سوزو، شکر گنج وغیرہ کا اعتماد جیت لیا ہے ۔

ان انڈسٹریز اور دیگر کئی نے محققین کے ساتھ مل کر ٹیکنالوجی کی منتقلی ، ملازمت کے مواقع پیدا کرنے ، جدید طریقوں سے سرمایہ کی فراہمی جیسے کارہائے نمایاں سرانجام دیے ہیں جو کہ ایچ ای سی اور ٹی ڈی ایف کی بہت بڑی کامیابی ہے۔