اصغر خان کیس میں سپریم کورٹ خود کوئی فیصلہ کر ے تو بہتر ہوگا، آفتاب شیرپائو

سیاستدانوں کی حب الوطنی پر شک کرنا افسوسناک ہے، چئیرمین نیب نواز شریف پر 4.9بلین ڈالر بھارت منی لانڈرنگ کے ذریعے بھیجنے کے بیان کی وضاحت کریں سربراہ قومی وطن پارٹی کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر کے باہر میڈیا سے گفتگو

بدھ مئی 19:42

اصغر خان کیس میں سپریم کورٹ خود کوئی فیصلہ کر ے تو بہتر ہوگا، آفتاب ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد خان شیرپائو نے کہا ہے کہ اصغر خان کیس میں سپریم کورٹ خود کوئی فیصلہ کر ے تو بہتر ہوگا، سیاستدانوں کی حب الوطنی پر شک کرنا افسوسناک ہے، چئیرمین نیب نواز شریف پر 4.9بلین ڈالر بھارت منی لانڈرنگ کے ذریعے بھیجنے کے بیان کی وضاحت کریں۔ وہ بدھ کو پارلیمنٹ ہائوس کے باہر کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ سیاست میں خطرات بہت بڑھ گئے ہیں،۔ سیاستدانوں کی حب الوطنی پر شک کرنا افسوسناک ہے جس کی مذمت کرتے ہیں۔

(جاری ہے)

نیب چئیرمین نیپہلے بھی کہا کہ مشرف دور میں 4ہزارپاکستانی امریکہ کے حوالے کء گئے جس کی بعد میں تردید کی گئی۔ اب نواز شریف پر الزام لگانا کہ انہوں نے بھارت 4اعشاریہ 9بلین ڈالر منی لانڈرنگ کر کے بھارت بھجوائے اور بعد میں اس کی تردید کرنا اس قوم کے ساتھ بھونڈا مذاق ہے۔ چئیرمین نیب اس کی وضاحت دیں ۔ اداروں کو ایسے معاملات میں احتیاط برتنی چاہیے۔ اصغر خان کیس میں سپریم کورٹ نے حکومت کو مشکل میں ڈال دیاہے۔ اس معاملے پر اگر سپریم کورٹ خود کوئی فیصلہ کرتی تو بہت بہتر ہوتا۔ رمضان کے مہینے میں ٹی وی پروگراموں پر پامبدی مناسب قدم نہیں۔