سینیٹ کی کمیٹیوں کے چیئرپرسن منتخب کرنے کے لئے پارلیمنٹ ہاؤس میں اجلاس

سینیٹ کی قائمہ کمیٹیوں ہاؤسنگ اینڈ ورکس، حکومتی یقین دہانیاں،فیڈرل ایجوکیشن اور سینیٹ کی فنگشنل کمیٹی برائے حکومتی یقین دہانیاں کے چیئرمین منتخب کرلئے گئے ملک اور عوام کے لئے ہر ممکن کردار ادا کریں گے، نو منتخب چیئرپرسن کا عزم

بدھ مئی 21:09

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) سینیٹ کی قائمہ کمیٹیوں ہاؤسنگ اینڈ ورکس، حکومتی یقین دہانیاں،فیڈرل ایجوکیشن اور سینیٹ کی فنگشنل کمیٹی برائے حکومتی یقین دہانیاں کے چیئرمین منتخب ہوگئے،،سینیٹ کی کمیٹیوں کے چیئرپرسن منتخب کرنے کے لئے گزشتہ روز پارلیمنٹ ہاؤس میں اجلاس منعقد کیا گیا،جس میں سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ہاؤسنگ اینڈ ورکس کے لئے نیشنل پارٹی کے سینیٹر میر اکبر احمد شاہی بلا مقابلہ چیئرمین منتخب جبکہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے فیڈرل ایجوکیشن کے لئے مسلم لیگ(ن) کی سینیٹر راحیلہ مگسی ایک مرتبہ پھر بلا مقابلہ منتخب ہوگئیں۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کے لئے میر یوسف بڈنی کو بطور چیئرمین منتخب کرلیاگیا،نو منتخب چیئرمینز کو اراکین نے مبارکباد پیش کی۔

(جاری ہے)

اس موقع پر چیئرمین کے لئے منتخب ہونے والے سینیٹرز نے اس بات کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا کہ وہ ملک اور عوام کے لئے ہر ممکن کردار ادا کریں گے۔اس موقع پر قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کے نو منتخب چیئرمین میر یوسف بڈنی کا کہنا تھا کہ میرا تعلق بلوچستان سے ہے،گزشتہ سالوں میں جتنا پیسہ بلوچستان کو دیاگیا وہ زمین پر تو نظر نہیں آرہا لیکن حکمرانوں کے لائف سٹائل ضرور تبدیل ہوئے ہیں،لیکن ہم ملک اور عوام کے مفاد میں ہر کام کریں گے،،نجکاری کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ پی آئی اے اور سٹیل مل لوگوں کو روزگار دینے کے لئے بنائے گئے تھے،لیکن ان کو اس طریقے سے نہ چلانے کی وجہ سے آج ان کا یہ حال ہے کہ خسارے میں جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میاں نوازشریف یہ تو کہتے ہیں کہ ووٹ کو عزت دو مگر خود وہ بلوچستان کے فیصلے مری اور رائیونڈ میں کرتے ہیں۔۔بلوچستان کے نوجوانوں نے مجبور ہوکر عدم اعتماد کا قدم اٹھایا۔۔سینیٹ کی فنگشنل کمیٹی برائے حکومتی یقین دہانیوں کے لئے چیئرمین سینیٹر محمد طاہر بزنجو منتخب ہوئے۔۔سینیٹ کی فنگشنل کمیٹی میں مسلم لیگ(ن) کے سینیٹر آصف کرمانی کا کہنا تھا کہ میں بہت جونیئر آدمی ہوں لیکن ہم لوگ یہاں مسائل کو حل کرنے کیلئے منتخب ہوکر آئے ہیں اور عوام کا پیسہ ہمیں حلال کرنا چاہئے،صرف گپ شپ اور چائے پینے میں وقت گزارنے کے بجائے ملک کے لئے کچھ کرنے کی ضرورت ہیٍ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آج نہ ہی ملک میں کوئی معیار کا کام نظر آتا ہے اور نہ ہی کوئی احساس۔میں خود بھی اپنے آپ کو اس میں شامل کرتا ہوں۔آصف کرمانی کا کہنا تھا کہ ہمیں ایمانداری سے اپنی کارکردگی دینی ہے اور ہمارا جو بھی کردار ہوگا اسے بھرپور طریقے سے ادا کرنے کی کوشش کریں گے۔اجلاس میں چیئرمین کے انتخاب کے موقع پر چیئرمین کے علاوہ صرف چار ممبران حاضر ہوئے۔ممبران کمیٹی نے اجلاس میں کم حاضری پر شدید تشویش کا اظہار بھی کیا۔