جعفرآباد، منتخب رکن اسمبلی نے اپنے دور اقتدار میں سوا دو ارب روپوں کو سیاسی رشوت کے نظر کردیا ،غلام محمد جمالی

بلوچستان کے پسماندہ علاقے تعمیر وترقی کے زینے چڑہ گئے ، ڈیرہ اللہ یار کھنڈرات میں تبدیل ہوا اور جمالی ہائوس کے نوکر چاکر کروڑ پتیبن گئے، سیاسی و سماجی رہنما کا الزام

بدھ مئی 21:34

جعفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) ڈیرہ اللہ یار کے سیاسی و سماجی رہنما غلام محمد جمالی نے کہا ہے کہ ڈیرہ اللہ یار سے منتخب رکن بلوچستان اسمبلی نے اپنے دور اقتدار میں سوا دو ارب روپوں کی خطیر رقم کو سیاسی رشوت کے نظر کردیا ہے بلوچستان کے پسماندہ علاقے تعمیر وترقی کے زینے چڑہ گئے مگر ڈیرہ اللہ یار کھنڈرات میں تبدیل ہوگیا ہے جمالی ہائوس ڈیرہ اللہ یار کے نوکر چاکر تو کروڑ پتی ہوگئے لیکن عوام آج بھی مختلف مصائب ومشکلات میں مبتلا ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے آن لائن سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا جی ایم جمالی کا کہنا تھا کہ پی بی 14سے منتخب رکن بلوچستان اسمبلی نے کمیونٹی ہالز اور پی سی سی سڑکوں کے نام پر سوا دو ارب روپوں سے زائد کی خطیر رقم کرپشن اور لوٹ مار کی نظر کردی ہے ڈیرہ اللہ یار اور گردونواح میں بجلی کی عدم فراہمی اور پینے کے صاف پانی جیسے بنیادی مسائل تاحال حل نہیں ہوسکے گزشتہ پانچ سال کے دوران تمام تر صلاحیتیں اس پر مزکور رکھی گئیں کہ کس طرح زیادہ سے زیادہ رقم جمع کر کے اثاثے بڑھائے جاسکتے ہیں غلام محمد جمالی نے کہا کہ آئندہ ہونے والے عام انتخابات میں سابق آزمائے ہوئے کرپٹ اور عوام دشمن عناصر کو عبرتناک شکست سے دوچار کر دینگے عوام کے پاس گھر گھر جاکر بتائیں گے کہ چوروں کو ووٹ دینا ظالم بادشاہ بنانے کے مترادف ہے غلام محمد جمالی نے کہا کہ عوام باشعور ہوچکے ہیں اب وہ وقت آگیا ہے کہ جب چوروں لٹیروں کو چھپنے کی جگہ بھی نہیں ملے گی ۔