پاکستان جوہری عدم پھیلائو پر عمل پیرا ہے،سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ

جوہری ٹیکنالوجی کی ترویج ، دنیا کے ساتھ چلنے کیلئے تیار ہے پاکستان غیر قانونی سمگلنگ کی روک تھام ، تابکاری سے بچائو کا نظام رکھتا ہے، سیمینار سے خطاب

بدھ مئی 22:16

پاکستان جوہری عدم پھیلائو پر عمل پیرا ہے،سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہا ہے کہ پاکستان جوہری عدم پھیلائو پر عمل پیرا ہے، جوہری ٹیکنالوجی کی ترویج ، دنیا کے ساتھ چلنے کیلئے تیار ہے، پاکستان غیر قانونی سمگلنگ کی روک تھام ، تابکاری سے بچائو کا نظام رکھتا ہے۔اسلام آباد میں دی پرزنٹ ، فیوچر اسٹرٹیجک ایکسپورٹ کنٹرول سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان پر امن جوہری پروگرام کا حامی ہے اور ٹیکنالوجیز سے استفادہ کرنا چاہتا ہے، پاکستان عالمی معاہدوں کی سختی سے پاسداری کررہا ہے، جوہری تحفظ ، تابکاری اثرات سے بچائو ، عدم پھیلائو کا قائل ہے۔

انہوںنے کہا کہ پاکستان نیوکلیر سپلائرز گروپ کی رکنیت چاہتا ہے، رکنیت کے حصول کا مقصد پرامن جوہری مقاصد کیلئے جوہری ٹیکنالوجیز کا استعمال ہے۔

(جاری ہے)

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ پاکستان اپنی صنعتوں کو رضاکارانہ طور پر جانچ کیلئے پیش کرتا ہے، پاکستان نے اقوام متحدہ ، سلامتی کونسل کی قراردکا من وعن اطلاق یقینی بنایا ہے۔

پاکستان کو سال 2013ء میں سرن کی ایسوسی ایٹ رکنیت حاصل ہوئی ہے۔انہوںنے کہا کہ بھارت کو 2008ء میں جوہری مراعات دینا امتیازی سلوک کیا گیا۔ پاکستان کسی بھی امتیازی سلوک کو قطعا تسلیم نہیںکرے گا۔ ہمسایہ ملک میں روایتی اور جوہری ہتھیاروں کا انبار لگار ہا ہے۔انہوںنے مطالبہ کیا کہ جوہری عدم پھیلائو کے معاہدے پر عدم دستخطی ممالک کو این ایس جی رکنیت کیلئے میکانزم بنایا جائے ۔

جوہری عدم پھیلائو عالمی ذمہ داری ہے۔ پاکستان کی توانائی کی ضرورت آئندہ دو دہائیوں تک دوگنا بڑھ جائے گی، پاکستان کا جوہری کمانڈ اینڈ کنٹرول نظام تہہ در تہہ محفوظ ترین ہے۔۔پاکستان جوہری، حیاتیاتی ہتھیاروں میں استعمال ہونے والی ٹیکنالوجیز کی برآمدات کو ریگولیٹ کیا۔تجارت، ترقی اور خوشحالی سب کا حق ہے۔تمام چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اشتراک عمل انتہائی ناگزیر ہے ۔۔۔۔۔