ٹھٹھہ، غیر ملکیوں کو شناختی کارڈز کے اجراء کے حق میں پیش ہونے والے بل کی حمایت کا تصور بھی نہیں کر سکتا، سید ایاز علی شاہ شیرازی

سندھ دھرتی ہماری ماں ہے، وزارتیں آنی جانی ہیں، سندھ کے ایشوز پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹیں گے اور اگر دباؤ آیا تو وزارت چھوڑ دیں گے،وزیر مملکت برائے نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کی پریس کانفرنس

بدھ مئی 22:23

ٹھٹھہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) وزیر مملکت برائے نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید ایاز علی شاہ شیرازی نے کہا ہے کہ غیر ملکیوں کو شناختی کارڈز کے اجرائ کے حق میں پیش ہونے والے بل کی حمایت کرنا تو دور کی بات ہے، حمایت کا تصور بھی نہیں کر سکتا، سندھ دھرتی ہماری ماں ہے، وزارتیں آنی جانی ہیں، سندھ کے ایشوز پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹیں گے اور اگر دباؤ آیا تو وزارت چھوڑ دیں گے۔

پریس کلب ٹھٹھہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایاز شاہ شیرازی نے کہا کہ سندھ کے تمام ایشوز پر ان کا مؤقف ہمیشہ سے دو ٹوک اور واضح رہا ہے، غیر ملکیوں کو شناختی کارڈ کے اجرائ کے حق میں ایم کیو ایم کی جانب سے قومی اسمبلی میں پیش کیے گئے بل سے میرا کوئی تعلق نہیں، ہم نے ہمیشہ غیر مقامی لوگوں کے خلاف بھرپور جدوجہد کی ہے اور انہیں دھرتی پر بوجھ تصور کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ بل میں میرا نام آنا سمجھ سے بالاتر ہے، نہ میں اسمبلی کے اجلاس میں گیا اور نہ ہی بل پر میرے دستخط ہیں، ایم کیو ایم سے میرا کوئی تعلق ہی نہیں ہم مسلم لیگ ن میں ہیں تو پھر کس بنیاد پر میرا نام دیا گیا ہے، معاملے پر قومی اسمبلی کے آئندہ اجلاس میں آواز بلند کروں گا، اسپیکر قومی اسمبلی معاملے کی تحقیقات کرائیں۔

(جاری ہے)

ایاز علی شاہ شیرازی نے پانی کی غیر منصفانہ تقسیم کے باعث ٹیل کے اضلاع خشک سالی سے دوچار ہیں، کوٹری ڈاؤن اسٹریم میں پانی نہ چھوڑے جانے کے باعث سمندر تیزی سے پیش قدمی کر رہا ہے، ٹھٹھہ، سجاول اور بدین کی 35 لاکھ ایکڑ زمین سمندر برد ہوگئی ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ کوٹری ڈاؤن اسٹریم میں مطلوبہ مقدار میں پانی چھوڑا جائے۔ اس موقع پر ضلعی کونسلر ریاض شاہ شیرازی، غلام حیدر شاہ شیرازی اور عبدالغنی قریشی بھی موجود تھے۔