ْاہل سنت جماعتوں کے گرینڈ الائنس ’’ نظام مصطفے متحدہ محاذ ‘‘ نے بڑھتی ہوئی سیاسی و مذہبی

ْانتہا پسندی کے خلاف جمعہ 11 مئی کو ملک بھر میں ’’ یوم امن و محبت ‘‘ منانے کا اعلان کر دیا

بدھ مئی 22:25

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) اہل سنت جماعتوں کے گرینڈ الائنس ’’ نظام مصطفے متحدہ محاذ ‘‘ نے بڑھتی ہوئی سیاسی و مذہبی انتہا پسندی کے خلاف جمعہ 11 مئی کو ملک بھر میں ’’ یوم امن و محبت ‘‘ منانے کا اعلان کر دیا۔ اس سلسلہ میں ملک بھر میں علمائے اہل سنت امن، محبت اور رواداری کے موضوع پر خطبات جمعہ دیں گے اور جمعہ کے اجتماعات میں سیاسی و مذہبی انتہا پسندی اور پر تشدد رویوں کے خلاف مذمتی قراردادیں منظور کی جائیں گی جبکہ عوام سے امن پسندی کا حلف بھی لیا جائے گا۔

اس بات کا اعلان نظام مصطفے متحدہ محاذ کے مرکزی راہنماؤں پیر سید منور حسین شاہ جماعتی، صاحبزادہ سید حامد سعید کاظمی،، ڈاکٹر ابوالخیر محمد زبیر، صاحبزادہ حامد رضا، پیر سید مظہر سعید کاظمی، ثروت اعجاز قادری، الحاج محمد حنیف طیب، پیر سید معصوم حسین نقوی، پیر میاں عبدالخالق، قاضی عتیق الرحمن، محمد عثمان خان نوری، پیر میاں جلیل احمد شرقپوری، پیر خالد سلطان قادری، پیر غلام رضوانی جیلانی، پیر سید شاہد حسین گردیزی کی طرف سے جاری کئے گئے مشترکہ اعلامیہ میں کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

اعلامیہ میں مزید کہا گیا ہے کہ اہل سنت جماعتیں وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال پر قاتلانہ حملہ کی شدید مذمت کرتی ہیں۔ اہل سنت تشدد کی سیاست پر یقین نہیں رکھتے بلکہ امن پسندی صوفیا کے پیروکاروں کی حقیقی شناخت ہے۔ یارسول اللہ کہنے والے بارود نہیں درود والے ہیں۔ ملک کے اکثریتی، پرامن اور محب وطن مکتبہ فکر کو امن کے راستے سے ہٹانے کی کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

اہل سنت کو بدنام کرنے کے لئے سازشیں کی جا رہی ہیں۔ تاریخ گواہ ہے کہ اہل سنت نے ہمیشہ طالبائزیشن کے خلاف جرات مندانہ آواز اٹھائی۔ اہل سنت نے جنازے اٹھا کر بھی اسلحہ نہیں اٹھایا۔ ہم اپنی روشن تاریخ کو داغدار نہیں ہونے دیں گے۔ مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ اسلام نفرت نہیں محبت کا درس دیتا ہے۔ ہم نظریات کا مقابلہ طاقت نہیں نظریات سے کرنے پر یقین رکھتے ہیں۔

ہم بُلٹ نہیں بیلٹ کے ذریعے انقلاب نظام مصطفے لانے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔ اہل سنت جماعتیں ہر طرح کی سیاسی و مذہبی شدت پسندی سے نفرت اور بیزاری کا اظہار کرتی ہیں۔ تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں سیاسی اخلاقیات کی پاسداری کریں۔ خطرات میں گھرا ہوا ملک کسی کشیدگی اور تصادم کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ کسی بھی فرد کو ختم نبوت جیسے مقدس عقیدے کے نام پر تشدد کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ وزیر داخلہ پر حملہ کرنے والے نے ختم نبوت کی جدوجہد کرنے والوں کو نقصان پہنچایا ہے۔ اس واقعہ کی شفاف تحقیقات کروا کر ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے۔ اہل سنت نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے مثال قربانیاں دی ہیں ہم ان قربانیوں کو ضائع نہیں ہونے دیں گے۔