جنوبی پنجاب صوبہ محاذ اورتحریک انصاف میںمعاہدہ،صوبہ تحریک پی ٹی آئی میں ضم ہوگئی

جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے 5ایم این ایز 15ایم پی ایز تحریک انصاف میں باضابطہ شامل ہو گئے تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے رہنمائوں کے درمیان باقاعدہ معاہدہ پر عمران خان، میر بلخ شیر مزاری، خسرو بختیار اور طاہر بشیر چیمہ کے دستخط جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کیلئے محاذ کی خدمات کا اعتراف کیا گیا ،یادداشت کے تحت دونوں جماعتوں میں بہتر گورننس اور وسائل کی منصفانہ تقسیم کیلئے انتظامی بنیادوں پر جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے پر اتفاق ہوا ،تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب محاذ کے اراکین پی ٹی آئی کے پرچم تلے نئے صوبے کیلئے مشترکہ جدوجہد کریں گے، انتخابات کے بعد اقتدار میں آنے کی صورت میں تحریک انصاف پہلے 100 دن کے اندر صوبے کے قیام کیلئے عملی اقدامات کریگی، معاہدے کے نکات

بدھ مئی 23:07

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) جنوبی پنجاب صوبہ محاذ اورتحریک انصاف میںمعاہدہ طے پاگیا جس کے بعد جنوبی پنجاب صوبہ تحریک پی ٹی آئی میں ضم ہوگئی۔جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے 5ایم این ایز 15ایم پی ایز تحریک انصاف میں شامل ہو گئے، تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے رہنمائوں کے درمیان باقاعدہ معاہدہ طے پایا جس میں عمران خان،، میر بلخ شیر مزاری،، خسرو بختیار اور طاہر بشیر چیمہ کے دستخط ہیں، معاہدے میں جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کیلئے محاذ کی خدمات کا اعتراف کیا گیا ،یادداشت کے تحت دونوں جماعتوں میں بہتر گورننس اور وسائل کی منصفانہ تقسیم کیلئے انتظامی بنیادوں پر جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے پر اتفاق ہوا ،،تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب محاذ کے اراکین پی ٹی آئی کے پرچم تلے نئے صوبے کیلئے مشترکہ جدوجہد کریں گے، انتخابات کے بعد اقتدار میں آنے کی صورت میں تحریک انصاف پہلے 100 دن کے اندر صوبے کے قیام کیلئے عملی اقدامات کریگی۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق بدھ کو اسلام آباد میں پاکستان ٹھریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے رہنمائوں نے تحریک انصاف کے ساتھ انضمام کا اعلان کیا۔پریس کانفرنس سے قبل جنوبی پنجاب محاذ کی قیادت نے بنی گالہ میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سے ملاقات کی، ملاقات میں بلخ شیر مزاری،، خسرو بختیار، نصراللہ دریشک اور طاہر بشیر چیمہ کے علاوہ جہانگیر ترین اور فواد چوہدری بھی موجود تھے، اس موقع پر عمران خان نے جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی پنجاب کے عوام کو ان کے حقوق ملنے چاہئیں۔

ملاقات کے دوران تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے رہنماں کے درمیان باقاعدہ معاہدہ طے پایا جس میں عمران خان،، میر بلخ شیر مزاری،، خسرو بختیار اور طاہر بشیر چیمہ کے دستخط ہیں۔سیاسی رہنماوں کے درمیان طے پائے گئے معاہدے کو یادداشت کا نام دیا گیا ہے اور معاہدے میں جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کے لئے محاذ کی خدمات کا اعتراف کیا گیا ہے۔

تحریک انصاف کی جانب سے جاری کردہ یادداشت کے تحت دونوں جماعتوں میں بہتر گورننس اور وسائل کی منصفانہ تقسیم کے لئے انتظامی بنیادوں پر جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے پر اتفاق ہوا ہے۔ تحریک انصاف اور جنوبی پنجاب محاذ کے اراکین پی ٹی آئی کے پرچم تلے نئے صوبے کے لئے مشترکہ جدوجہد کریں گے، انتخابات کے بعد اقتدار میں آنے کی صورت میں تحریک انصاف پہلے سو دن کے اندر صوبے کے قیام کے لئے عملی اقدامات کرے گی۔

جنوبی پنجاب صوبہ محاذ پی ٹی آئی کے ساتھ مل کر جنوبی پنجاب کی محرومیاں دور کرے گا جب کہ پی ٹی آئی کی طرف سے جنوبی پنجاب اتحاد کو ہرممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔معاہدے کے نکات کے مطابق جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے میں رکاوٹیں دور کرنے کے لئے کمیٹی بنانے پر اتفاق کیا گیا ہے جب کہ کمیٹی کاچیئرمین اورسکریٹری بھی بنایاجائے گا۔

پاکستان تحریک انصاف میں جنوبی پنجاب محاذ کے شامل ہونے والے ارکان پارلیمنٹ میں 5 ایم این اے اور 15پنجاب اسمبلی کے ارکان شامل ہیں، تحریک انصاف میں شامل ہونے والوں میں این اے 194 رحیم یار خان 3سے منتخب ہونے والے مخدوم خسرو بختیار،این اے 190بہاولنگر3سے منتخب ہونے والے طاہر بشیر چیمہ، این اے 169وہاڑی 3سے منتخب ہونے والے طاہر اقبال چوہدری، این اے 153 ملتان6سے منتخب ہونے والے رانا محمد قاسم نون، این اے 179مظفر گڑھ 4سے منتخب ہونے والے مخدوم زادہ باسط بخاری شامل ہیں جبکہ تحریک انصاف میں شامل ہونے والوں میں پی پی 249راجن پور سے منتخب ہونے والوں میں سردار نصراللہ خان دریشک، پی پی 222بہاولپور سے منتخب ہونے والے سمیع اللہ چوہدری ،پی پی 202نوشہروفیروز سے منتخب ہونے والے اصغر علی شاہ، پی پی 267بہاولپور ون سے مخدوم سید افتخار حسن گیلانی، پی پی 255مظفر گڑھ سے منتخب ہونے والے میاں علمدار عباس قریشی، پی پی 252مظفر گڑھ ٹو سے منتخب ہونے والے محمد ذیشان گورمانی ،پی پی 253مظفر گڑھ تھری سے غلام مرتضیٰ رحیم کھر، پی پی 259مظفر گڑھ فور سے منتخب ہونے والے سردار خان محمد جتوئی، پی پی 218خانیوال سیون سے منتخب ہونے والے محمد جمیل شاہ، پی پی 219خانیوال آٹھ سے منتخب ہونے والے کرم داد واہلہ، پی پی 264لیہ تھری سے منتخب ہونے والے سردار قیصر عباس خان مگسی، پی پی 243ڈیرہ غازی خان فور سے منتخب ہونے والے سردار محمد خان لغاری، پی پی 202ڈیرہ غازی خان سے منتخب ہونے والے مقصود احمد خان لغاری، پی پی 241ڈیرہ غازی خان ٹو سے منتخب ہونے والے سردار فتح محمد خان بزدار اور پی پی 245سے منتخب ہونے والے چوہدری محمد عالم گجر شامل ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی نے مسلم لیگ (ن)سے الگ ہوکر جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کی جدوجہد کرنے کا اعلان کیا تھا۔