ضلعی انتظامیہ سکھر نے رمضان المبارک کے دوران اشیاء خوردونوش کے معیار کو یقینی بنانے کے لئے تمام کھانے پینے کی اشیاء کے کراچی اور روہڑی کی لیبارٹریوں سے فوڈ سیپلنگ کرانے کا فیصلہ

بدھ مئی 23:20

سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) ضلعی انتظامیہ سکھر نے رمضان المبارک کے دوران اشیاء خوردونوش کے معیار کو یقینی بنانے کے لئے تمام کھانے پینے کی اشیاء کے کراچی اور روہڑی کی لیبارٹریوں سے فوڈ سیپلنگ کرانے کا فیصلہ کرتے ہوئے مارکیٹ میں کینیڈین دالوں کی فروخت پر مکمل پابندی عائد کر دی ہے یہ فیصلہ ڈپٹی کمشنر سکھر رحیم بخش میتلو کی زیر صدارت انکے آفس کے کانفرنس روم میں ماہ رمضان کے دوران کھانے پینے کی اشیاء کے نرخ مقرر کرنے اور احترام رمضان آرڈیننس پر مکمل عملدرآمد کرانے کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس کے دوران کیا گیا ۔

اس موقع پر مختلف اشیاء خوردونوش کے نرخ مقرر کئے گئے ۔ ڈپٹی کمشنر سکھر رحیم بخش میتلو نے کہا کہ رمضان المبارک کا بابرکت مہینہ صبر اور ایک دوسرے کے احترام کا درس دیتا ہے اس لئے کسی کو بھی کھانے پینے کی اشیاء میں ملاوٹ اور زخیرہ اندوزی کرنے کی اجازت ہر گز نہیں دی جائے گی اور احترام رمضان آرڈیننس پر مکمل عملدرآمد کیا جائے گا ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے دوران بچت بازار لگانے کی ہدایت کی گئی ہے ، اس ضمن میں دوکانداروں، تاجروں اور انتظامیہ کے نمائندوں پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ۔

ڈی سی سکھر نے دکانداروں اور تاجروں پر زور دیا کہ حکومت کی جانب سے مقرر کردہ نرخ نا مہ نمایاں جگہ پر آویزاں کریں خلاف ورزی کے مرتکب افراد کے خلاف سخت کاروائی کرتے ہوئے بھاری جرمانہ عائد کیا جائے گا ۔ ڈی سی سکھر نے تمام اسسٹنٹ کمشنرز اور مختیار کاروں کو کہا کہ کھانے پینے کی اشیاء کے مقرر کردہ سرکاری نرخوں کے مطابق فرخت کو یقینی بنانے کے لئے زاتی طور پر فیلڈ میں موجو رہیں اور رمضان کے مقدس مہینے میں عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے اپنے فرائض ایمانداری کے ساتھ ادا کریں۔

ڈپٹی کمشنر سکھر نے کہا کہ رمضان المبارک کے مہینے میں ڈی سی آفس سکھر اور گھنٹہ گھر کے نزدیک شکایتی سیل قائم کر کے زائدنرخ وصول کرنے والے دوکانداروں کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ اجلاس کے دوران سکھر میں کینیڈین دال کی عام فروخت کے متعلق آگاہی دی گئی جس پر ڈی سی سکھر نے کینیڈین دال کی فروخت پر مکمل پابندی لاگو کرتے ہوئے ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ یہ دال مضر صحت ہے جسے بیسن اور میدے میں استعمال کیا جا رہا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ کینیڈین دال کی فروخت کرنے والے تاجروں اور ڈیلرز کے خلاف کارروائی کی جائے۔

ڈی سی سکھر نے کہا کہ ناقص اور مضر صحت اور باسی اشیائے خوردونوش فروخت کرنے والوں کوہر گز نہیں بخشا جائے گا جبکہ خراب اور دو نمبر سامان تیار کرنے والی فیکٹریوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انکو سیل کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ غیر معیاری کھانے پینے کی اشیاء کے معیار کا جائزہ لینے کے لئے ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو اچانک چھاپے مارکر موقع پر جرمانہ عائد کر کے سزا دینگی ، جبکہ فوڈ سیمپلنگ کراچی اور روہڑی کی لیابارٹریوں سے کرائی جائے گی تاکہ اشیائے خورد ونوش کے معیار کو یقینی بنایا جا سکے ۔ اجلاس میں ضلعی انتظامیہ کے افسران سمیت مختلف مارکیٹ کمیٹیز کے نمائندوں اور تاجر رہنماؤن نے شرکت کی۔