ہائوسنگ سوسائٹیوں میں کرپشن و اقرباء پروری، چیف کمشنر کا آپریشن کلین اپ کا فیصلہ

ضلعی انتظامیہ کے درجنوں افسران کیخلاف انکوائری کھلنے کا قوی امکان پیدا ہو گیا جناح گارڈن و سویلین ایمپلائز کوآپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی میں مبینہ طور پر سابق رجسٹرار و سرکل رجسٹرار کی مداخلت سے متعلق سینکڑوں درخواستیں قبضہ میں لے لی گئیں سیکرٹری وزارت داخلہ نے ضلعی انتظامیہ کے کرپٹ افسران کو فی الفور جیل کی سلاخوں کے پیچھے بند کرنے کا عندیہ دیدیا

بدھ مئی 23:45

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) چیف کمشنر اسلام آباد نے اسلام آباد انتظامیہ پر وفاقی دارالحکومت کی درجنوں ہائوسنگ سوسائٹیز میں اقرباء پروری ، اربوں روپے کی کرپشن کے حوالے سے لگے کرپشن کے بدنما داغ دھونے کے لئے کمر کس لی ، ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کو رجسٹرار و سرکل رجسٹرار کی اتھارٹی دے کر کرپشن کے خلاف مضبوط پنجہ گاڑھ دیا گیا، ضلعی انتظامیہ کے درجنوں افسران کیخلاف انکوائری کھلنے کا قوی امکان پیدا ہو گیا ، جناح گارڈن و سویلین امپلائز کوآپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی میں مبینہ طور پر سابق رجسٹرار و سرکل رجسٹرار کی مداخلت سے متعلق سینکڑوں درخواستیں قبضہ میں لے لی گئی ہیں،سیکرٹری وزارت داخلہ نے ضلعی انتظامیہ کے کرپٹ افسران کو فی الفور جیل کی سلاخوں کے پیچھے بند کرنے کا عندیہ دیدیا ہے ۔

(جاری ہے)

اطلاعات کے مطابق چیف کمشنر اسلام آباد آفتاب اکبر درانی نے اسلام آباد انتظامیہ کے ماتحت درجنوں ہائوسنگ سوسائٹیوں میں اربوں روپے کی کرپشن اور ہائوسنگ سوسائٹیز انتظامیہ کو بلیک میل کرکے قیمتی پلاٹ ہتھیانے اور شہریوں کے حقوق ضبط کرنے سے متعلق متعدد شکایات پر سرکل رجسٹرار مظہر حسین کو ان کے عہدے سے نہ صرف برخاست کردیا بلکہ ان کیخلاف میگا کرپشن و اقرباء پروری کے حوالے سے انکوائری کے احکامات دیئے تھے ۔

بعدازاں متعدد درخواستوں کو مد نظر رکھتے ہوئے چیف کمشنر اسلام آباد نے فیصلہ کیا کہ ضلعی انتظامیہ پر لگے کرپشن کے بدنما داغ کو دھونے کے لئے تمام تر ہائوسنگ سوسائٹیوں کا انٹرنل آڈٹ اور نقشہ جات میں تبدیلی پر جامع رپورٹ مرتب کرکے ذمہ داران افسران کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے اس حوالے سے انہوں نے ڈپٹی کمشنر کیپٹن (ر)مشتاق احمد کو ایک نوٹیفیکیشن نمبر1(19-Law/7) کے تحت احکامات دیئے تھے کہ وہ رجسٹرار اور سرکل رجسٹرار کی تمام تر اتھارٹی کو فوری طور پر اپنے قبضے میں لے کر کارروائی کا آغاز کریں ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکرٹری وزارت داخلہ نے ضلعی انتظامیہ کو ہدایات دی تھیں کہ وزارت داخلہ ہائوسنگ سوسائٹی نے الیکشن کے موقع پر مبینہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ووٹر فہرستوں میں کی جانیوالی ردوبدل اور اس پر ان کے ذاتی مفادات پر رپورٹ مرتب کی جائے تاہم دوسری جانب چیف کمشنر اسلام آباد کو دیگر درجنوں شکایات بھی موصول ہوچکی تھیں جس پر انہوںنے پورے گھر کی صفائی کو ترجیح دیتے ہوئے تمام تر کرپٹ افسران اور ہائوسنگ سوسائٹیوں میں میگاکرپشن پر جھاڑو پھیرنے کے اقدامات مکمل کرلئے ہیں۔

ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کیپٹن(ر) مشتاق احمد نے چیف کمشنر آفس کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے بعد ہائوسنگ سوسائٹیوں سے متعلق تمام تر ریکارڈ اپنے قبضے میں لیتے ہوئے انٹرنل انکوائری شروع کردی ہے ۔ظفرملک