ٹرمپ کا عالمی معاہدوں سے علیحدگی بین الاقوامی ضابطے کی خلاف ورزی ہے، ساجد علی نقوی

امریکی صدر کا یہ عمل آزاد ملک اورقوموں کے حقوق کوطاقت کے بل پوتے پر پامال کر نے کی کوشش ہے،قائد ملت جعفریہ پاکستان

بدھ مئی 23:33

راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ایران جوہری معاہدے سے علیحدہ ہونے کا اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرمپ کا عالمی معاہدوں سے علیحدگی بین الاقوامی ضابطے کی خلاف ورزی ہے اورامریکی صدر کا یہ عمل آزاد ملک اورقوموں کے حقوق کوطاقت کے بل پوتے پر پامال کر نے کی کوشش ہے۔

انہوںنے کہا کہ امریکی صدر کا جوہری معاہدے سے نکلنے کا فیصلہ افسوسناک ہے ، کسی طاقتور ملک کو کسی دوسرے آزاد ملک و قوم کی معیشت پر دبا ڈالنے اور اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔انہوں مزیدکہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ایران ڈیل ختم کرنے کا فیصلہ گمراہ کن اور سنگین غلطی ثابت ہو گی ، یہ واضح ہے کہ یورپی اتحادیوں کے علاوہ آزاد ماہرین اور موجودہ امریکی وزیر خارجہ خود اس معاہدے کے حامی ہیں اور یہی وجہ ہے کہ سابق امریکی صدر اور سابق امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے بھی جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے کے ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے کی مخالفت کی ہے اور امریکا کی جانب سے جان کیری کی ہی قیادت میں ایران سے جوہری معاہدہ طے پایا تھا۔

(جاری ہے)

جان کیری کابھی کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے سے امریکا کی بات خراب ہوئی ہے، علامہ ساجد نقوی کا مزید کہنا تھا کہ ُامید ہے کہ امریکا کے بغیر بھی معاہدہ برقرار رہے گاآخرمیں علامہ ساجد نقوی کا کہناتھا کہ بین الاقوامی معاہدوں میں شامل دیگر ممالک کی ذمہ داری بڑھ گئی ہے کہ اس معاہدہ پر عمل درآمد کرانے کیلئے امریکہ پر دبائو ڈالیں اور ان ممالک پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ معاہدہ توڑنے والے امریکی صدر کا بھی احتساب کریں اور ٹرمپ نے ایران پر اقتصادی دباو ڈالنے کیلئے جو نفسیاتی جنگ شروع کی ہے اس کا حصہ نہ بنیں اور معاہدہ کی تکمیل کیلئے امریکی صدر پر دبائو ڈالیں۔