سندھ حکومت کی جانب سے نئے مالی سال کے بجٹ کے موقع پراپوزیشن جماعتیں ایم کیو ایم ، پی ٹی آئی، مسلم لیگ نون اورفنکشنل لیگ ہم آواز ہوگئیں

ایم کیو ایم کے ارکان کے ترقیاتی فنڈز ہڑپ کرلیے گئے ہیں بلدیاتی اداروں کے وسائل بھی سندھ حکومت نے اپنے قبضے میں لے لیے ہیں، خواجہ اظہار الحسن سندھ بجٹ کی تیاری میں حسب روایت پیپلزپارٹی والے اپنی من مانی کررہے ہیں، سید سردار احمد

بدھ مئی 23:49

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) سندھ حکومت کی جانب سے نئے مالی سال کا بجٹ پیش کیے جانے کے موقع پراپوزیشن جماعتیں متحدہ قومی موومنٹ ، پی ٹی آئی مسلم لیگ نون اورفنکشنل لیگ ہم آواز ہوگئیں۔ بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے بھرپور احتجاج کی تیاری کرلی گئی۔۔سندھ بجٹ پیش کیے جانے کے موقع پرآج سندھ اسمبلی میں اپوزیشن جماعتیں سندھ حکومت کے خلاف بھرپوراحتجاج کریں گی سابقہ بجٹ میں اپوزیشن ارکان کی ترقیاتی اسکیموں کونظراندازکرنے اوران کے ترقیاتی فنڈز حکومتی ارکان کودیے جانے کا معاملہ ایوان میں اٹھایا جائے گا دوسری جانب شہری حکومت کی ترقیاتی اسکیمیں بجٹ میں شامل نہ کرنے پرمیئرکراچی اور بلدیہ عظمیٰ میں اپوزیشن پارٹیوں نے بھی حکومت سندھ کے خلاف احتجاج کی تیاری کرلی ہے سٹی کونسل کے ممبران سندھ اسمبلی کے باہر احتجاجی مظاہرہ کریں گے،حکومت سندھ کی جانب سے کراچی باالخصوص کے ایم سی کی اسکیموں کو بجٹ میں شامل نہ کرنے پر احتجاج کرنے کا فیصلہ سٹی کونسل میں شامل جماعتوں نے مشترکہ طورپر کیا بلدیاتی نمائندے برنس روڈ سے سندھ اسمبلی تک مارچ کریں گے تاکہ حکومت کو بجٹ میں نظرثانی پر مجبور کیا جا سکے،،احتجاج میں بلدیہ عظمیٰ کراچی میں برسراقتدار ایم کیو ایم پاکستان سمیت اپوزیشن پارٹیوں مسلم لیگ نون ،،تحریک انصاف،، جمعیت علمائ اسلام (ف) سمیت دیگر جماعتوں کے ارکان شریک ہونگے۔

(جاری ہے)

سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرخواجہ اظہارالحسن نے تمام جماعتوں کے ارکان کو بجٹ اجلاس میں شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کردی ہے۔۔ایم کیو ایم کے ارکان سندھ اسمبلی نے عوامی ایشوز پر اپنی حکمت عملی طے کرلی ہے۔ پارٹی کے دونوں دھڑوں میں جاری کشمکش سے کنارہ کرتے ہوئے حکمران جماعت پیپلزپارٹی کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کرلیا۔۔ایم کیوایم کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں ایم کیوایم کے دونوں دھڑوں کے 18 اراکین اسمبلی شریک ہوئے۔

قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن اور سید سردار احمد کا کہنا ہے کہ سندھ بجٹ کی تیاری میں حسب روایت پیپلزپارٹی والے اپنی من مانی کررہے ہیں۔ تحریک انصاف کے خرم شیرزمان کا کہنا ہے کہ صوبے میں مالی بے ضابطگیاں اور کرپشن عروج پر ہے۔اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کا کہنا ہے کہ حکومت جاتے جاتے سارا بجٹ ٹھکانے لگانے پر تٴْلی ہوئی ہے۔خواجہ اظہارنے کہاکہ ایم کیو ایم کے ارکان کے ترقیاتی فنڈز ہڑپ کرلیے گئے ہیں بلدیاتی اداروں کے وسائل بھی سندھ حکومت نے اپنے قبضے میں لے لیے ہیں۔