سی ڈی اے نے وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کے ایکوائر و غیر ایکوائر شدہ علاقوں میں کثیر منزلہ عمارتوں کی تعمیر کے لیے کم سے کم رقبہ 20کینال مختص کرنے کی منظوری دے دی

بدھ مئی 23:10

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) وفاقی ترقیاتی ادارے ( سی ڈی اے ) نے وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کے ایکوائر و غیر ایکوائر شدہ علاقوں میں کثیر منزلہ عمارتوں ( فلیٹوں) کی تعمیر کے لیے کم سے کم رقبہ 20کینال مختص کرنے کی منظوری دے دی ہے، بورڈفیصلے سے زون ٹو ، فور اور فائیو میں درمیانے درجہ کی رہائشی عمارتوں کی تعمیر کی اجازت دے دی گئی ہے، بورڈ نے سیکٹر ای الیون کی زوننگ پالیسی 2007میں تبدیلی کی سفارشات منظور کرتے ہوئے مذکورہ سیکٹر میں سی ڈی اے کی ملکیت دوکلومیٹر کمرشمل اراضی کا لے آوٹ پلان بھی منظور کرلیا ہے بورڈ نے وزارت دفاع کی سفارش پر کری (موضعہ گھوڑا باغ) میں 245کینال اراضی حساس ادارے کو الاٹ کرنے کی منظوری دے دی ہے،،سی ڈی اے کے ماسٹر پلا ن میں مجوزہ تبدیلی کے لئے کنسلٹنٹ(معاون)کی خدمات حا صل کرنے کی بھی منظوری دے دی ہے۔

(جاری ہے)

سی ڈی اے بورڈ کا اجلاس بدھ کوچیئرمین سی ڈی اے کی زیر صدارت سی ڈی اے ہیڈکوارٹر میں منعقد ہو ا بورڈمیں وفاقی ترقیاتی ادارے ( سی ڈی اے ) کے شعبہ پلاننگ و ڈیزائن نے سمری پیش کی کہ اسلام آباد کے ایکوائرو غیرایکوائر شدہ علاقوں میں فلیٹوں کی تعمیر کے منصوبہ جات کے لیے مخصو ص چالیس کینال اراضی کی شرط میں نرمی لائی جائے اور ان علاقوں میں فلیٹس بنانے کے لیے درکار اراضی چالیس کینال سے کم کرکے 20کینال مخصوص کیا جائے پلاننگ و ڈیزائن نے سفارش کی کہ چالیس کینال کی شرط کے باعث زون ٹو ، فور اور فائیو میں بے ہنگم عمارتوں کی تعمیرات روکنے میں مدد ملے گی بورڈ نے پلاننگ و ڈیزائن کی سفارشات کی منظوری دیتے ہوئے اسلام آباد بھر میں فلیٹس کے منصوبے کے لیے کم سے کم اراضی بیس کینال مختص کرنے کی منظوری دے دی ہے بور ڈ نے سیکٹر ای الیون میں کی جانے والی بے ہنگم تعمیرات کو روکنے کے لیے پلاننگ و ڈیزائن کی جانب سے زوننگ پالیسی 2007میں تبدیلی کی اجازت دے دی ہے جس کے بعد پالیسی پر پورا اترنے والی تعمیرات کو ریگولرائز کرنے میں بھی مدد ملے گی بورڈ نے سیکٹر ای الیون میں واقع سی ڈی اے کی دو کلومیٹر پر واقع تجارتی اراضی کا لے آوٹ پلان کی بھی منظور ی دے دی ہے بورڈ کی منظور ی کے بعد سی ڈی اے کو بلیو ایریا کی سیکٹر ای الیو ن تک توسیع کی باضابطہ اجازت مل گئی ہے،،سی ڈی اے سیکٹر ای الیون میں لگائی گئی مارکیز کے سامنے واقع اپنا کمرشل ایریا کو مستقبل میں تجارتی مقاصد کے لیے فروخت کرسکے گا سی ڈی اے بورڈ نے وزارت دفاع کی سفارش پر کری میں حساس ادارے کے لئیے 245کینال اراضی کی بھی منظوری دے دی ہے تاہم مذکورہ لینڈ پر عمارت کی تعمیر کے لیے فنڈز تفویض کرنے کی سفارش کو مسترد کردیا گیا ہے۔

بورڈ نے سی ڈی اے کے ماسٹر پلا ن میں مجوزہ تبدیلی کے لئے کنسلٹنٹ(معاون)کی خدمات حا صل کرنے کی بھی منظوری دے دی ہے،واضح رہے کہ سی ڈی اے آرڈینس 1960کے تحت ماسٹر پلا ن میں پبلک ہیرینگ کے بعد ہر 20 سال میں ضرورت کے تحت تبدیلی ضروری ہے تاہم ایسا عمل پہلی بار کیا جا رہا ہے۔

متعلقہ عنوان :