شہر قائد میںقائم ہونے والے امن کیلئے سیکورٹی اداروں کی قربانیاں اور جہدوجہد مثالی ہے،تنویر قریشی

جمعرات مئی 00:00

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) مہاجر قومی موومنٹ ((پاکستان)) کے سیکریٹری مالیات تنویر قریشی نے کہا کہ شہر قائد میںقائم ہونے والے امن کیلئے سیکورٹی اداروں کی قربانیاں اور جہدوجہد مثالی ہے،جنہیں کسی طور نذر انداز اور فراموش نہیں کیا جاسکتا،لیکن آج ایک با ر پھرملک ،شہر اور مہاجر قوم کو نقصان پہنچانے والی قوتیں متحرک ہوچکی ہیں ،جن کا مقصد وطنِ عزیز کو دنیا بھر میں بدنام اور رسوا کرنا ہے،جسے مہاجرعوام کسی طور کامیاب نا ہونے نہیںدینگی۔

تنویر قریشی نے کہا کہ گلشن اقبال میں دوسیاسی جماعتوں کے درمیان ہونے والا تضادم شہر کے امن کو سبوتاژکرنے کی سازش ہے ، جبکہ جلسے یا سیاسی پاور دکھانے کیلئے سارا شہر پڑا ہے لیکن کیا وجوہات ہیں کہ دونوں جماعتوں کا ایک ہی علاقہ اور ایک ہی گراونڈ میں جلسہ کرنے کیلئے بضدہے،باہر سے آئی سیاسی جماعتیں عوام کو گھروں میں محصور کرنے کیلئے اپنی اپنی طاقت کا استعمال کررہی ہیں ، جبکہ عوام کو کرب اور مشکلات میں مبتلا کیا ہوا ہے۔

(جاری ہے)

تنویر قریشی نے کہا کہ ملک کے معاشی حب کراچی کے امن کو سبوتاژکرنے اور باہر سے لوگوں کو لاکر شہر پر قابض کرنے کا سلسلہ نا صرف مقامی افرادکے حقوق کو غضب کرنے سازش ہے بلکہ مہاجر سیاست کودیوار سے لگانے کی گھناونی کوشش ہے، جسے مہاجر قوم نے مکمل طور پر مسترد کردیاہے، 06مئی کا جلسہ روکاٹوں اور مشکلات کے باوجود عوامی سمندر میں تبدیل ہونا مہاجر قوم کی مہاجر پرچم تلے متحد اور منظم ہونے کی پختہ دلیل ہے۔

سیکریٹری مالیات تنویر قریشی نے 06 مئی کو لیاقت آباد فلائی آوور پرہونے والے جلسے کی فقیدالمثال کامیابی کے بعد لیاقت کا دورہ کیا اور عوام کا دل کی گہرائیوں سے شکریہ اور مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ عوام اپنے حوصلوں اور جزبوں کو اسی طرح پرعزم اور باحوصلہ رکھیں،بہت جلد مہاجر صوبہ مہاجر قوم کی منزل ہوگا۔تنویر قریشی نے کہا کہ ناجانے کیوں حکمران نئے صوبوں کے قیام سے خوفزدہ ہیں ،انتظامی یونٹ کے قیام اور نئے صوبوں کے بننے سے ملک نا صرف ترقی کی راہ پرگامزن ہوگا بلکہ انتظامی امور چلانے میں اہم اور کارگر ثابت ہوگا،،دنیا بھر میں بین القوامی قوانین کے مطابق جس شہر کی آبادی 50لاکھ سے زائد ہو اس کو علیحدہ صوبہ کا درجہ دینا یا عوامی سطح پر اس کا مطالبہ کرنا قانون ًدرست مطالبہ ہے ،جس کی نفی قانون کی خلاف ورزی کے مترادف ہے۔

#