چئیرمین نیب کو اپنی غلطی تسلیم کر لینی چاہئیے

وزیراعظم شاہد خاقان کا چیئر مین نیب کو پارلیمنٹ میں بلانے کا مطالبہ کچھ زیادہ ہے،چئیرمین نیب کی نیت ہر شک نہیں تاہم ان کو غلطی اعتراف کر لینا چاہئیے،معروف تجزیہ نگار حامد میر کی گفتگو

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 12:03

چئیرمین نیب کو اپنی غلطی تسلیم کر لینی چاہئیے
لاہور(اردوپوائنٹ تازہ ترین اخبار۔10 مئی 2018ء) قومی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق معروف تجزیہ نگار و کالم نگار حامد کا کہنا ہے کہ بھارت رقم منتقل کرنے سے متعلق پریس ریلیز جاری کر کے نیب سے غلطی ہوگئی ہے۔نیب کو اپنی غلطی تسلیم کر لینی چاہئیے۔نیب نے پریس ریلیز جاری کر کے جو وجوہات بیان کی ہیں وہ افسوسناک ہیں۔۔حامد میر کا کہنا تھا کہ ایک شائع کیے گئے کالم کی بنیاد پر نیب نے نواز شریف کے خلاف بھارت منی لانڈرنگ کرنے کی تحقیقات شروع کرنے کی پریس ریلیز جاری کی۔

حامد میرکا مزید کہنا تھا کہ نیب نے معاملے کو ختم کرنے کی بجائے نئی پریس ریلیز جاری کر کے مزید سوالات کو جنم دےد یا ہے۔چئیرمین نیب کی نیت پر شک نہیں کیا جا سکتا تا ہم ان سے غلطی ہو گئی ہے اس لیے ان کو اپنی غلطی تسلیم کر لینی چاہئیے۔

(جاری ہے)

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا چیئر مین نیب کو پارلیمنٹ میں بلانے کا مطالبہ کچھ زیادہ ہے ۔کوینکہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسییہ بات ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ نیب کو کسی خاص جماعت کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے۔

چئیرمین نیب کا چاہئیے کہ پریس ریلیز واپس لیتے ہوئے اپنی غلطی کا اعتراف کریں۔یاد رہے کہ نیب نے ایک اعلامیہ جاری کیا تھا۔جاری کردہ اعلامیہ نیب کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف اور دیگرکیخلاف مبینہ طورپر4.9 بلین ڈالررقم بھارت بھیجنے کی شکایات موصول ہوئی ہیں۔جس پرچیرمین نیب نے نواز شریف اور دیگر کیخلاف جانچ پڑتال کا حکم دے دیا ہے۔

اعلامیہ میں مزید بتایا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف اور دیگرکی جانب سے یہ رقم مبینہ طور پرمنی لانڈرنگ کے ذریعےبھارت بھجوائی گئی۔ منی لانڈرنگ کے ذریعے بھارتی حکومت کے سرکاری خزانہ میں 4ارب 9 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم بھجوائی گئی ہے۔رقم کی منتقلی سے بھارتیحکومت کے غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائرمیں اضافہ ہو گیا ہے۔تاہم وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا نوازشریف کیخلاف منی لانڈرنگ کے الزام کے نیب نوٹس پر چیئرمین نیب کو پارلیمنٹ میں طلب کرکے ان سے تفتیش کا مطالبہ کیا تھا۔