لیگی قیادت کیخلاف مفروضوں پر کی جانے والی تحقیقات سے اداروں کی بدنامی ہو رہی ہے ‘پرویز ملک

اتنا عرصہ ٹرائل کے باوجود کچھ نہیںملا،نہ ہی جھوٹے الزامات لگانیوالوں کیخلاف کوئی کارروائی کی گئی‘ خواجہ عمران نذیر

جمعرات مئی 14:17

لیگی قیادت کیخلاف مفروضوں پر کی جانے والی تحقیقات سے اداروں کی بدنامی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ(ن) لاہور کے صدر و وفاقی وزیر محمد پرویز ملک اور صوبائی وزیر صحت خواجہ عمران نذیر نے کہا ہے کہ لیگی قیادت کیخلاف مفروضوں پر کی جانے والی تحقیقات کی قانونی حیثیت کیا ہوگی،اس سے شکوک و شبہات جنم لے رہے ہیں اورادارے خود ہی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں،اتنا عرصہ ٹرائل کرنے کے باوجود کچھ نہیںملا،نہ ہی جھوٹے الزامات لگانے والوں کے خلاف کوئی کارروائی کی گئی ہے،،زرداری ہاوس اوربنی گالا ہم نوالہ،ہم پیالہ ہیں۔

خان صاحب خود کہہ چکے ہیں کہ سینٹ کے الیکشن میںانہیں40کروڑ روپے کی آفر ہوئی،وہ دو پاکستان کی بجائے ایک پاکستان بنانے کی بات کرتے ہیں لیکن وہ کوئی ایک مثال اور اقدام تو ایسا بتائیں جو انہوں نے ایک پاکستان بنانے کے حوالے سے کیا ہے۔

(جاری ہے)

ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز لاہور دفتر میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ارکان اسمبلی چوہدری شہباز،میاںمرغوب احمد،سید توصیف شاہ،سینیٹر ڈاکٹر اسد اشرف،عامر خان،چوہدری عبدالمجید چن نمبردار،جاوید اقبال سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ 70کروڑ روپے کی لاگت سے احتساب کا ادارہ بنایا جو آج بھی بند ہے اوراس ادارے میں کرپشن پر کسی ایک کو بھی ادارے نے سزا نہیں دی۔نیازی صاحب نے کے پی کے میں ایک ارب درخت لگانے کا جھوٹ بولا اوروہ دن رات جھوٹ بول رہے ہیں۔الزام تراشی اورجھوٹ بولنا عمران نیازی کا معمول بن چکا ہے۔2018ئ کے انتخابات میں قوم اس کا انہیں جواب دے گی۔