بھارت کے دن کشمیرمیں گنے جا چکے ہیں اور وہ 2025میں مقبوضہ علاقے سے نکل جائے گا، مفتی ناصرالاسلام

کشمیرایک پیچیدہ مسئلہ ہے اور بھارت تمام حربے آزمانے کے باوجود کشمیریوں کی تحریک مزاحمت کو توڑنے میں ناکام رہا

جمعرات مئی 14:29

سرینگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) مقبوضہ کشمیر کے نامزد مفتی اعظم اور مسلم پرسنل لا بورڈ کے نائب چیئرمین مفتی ناصر الاسلام نے کہا ہے کہ بھارت کے دن کشمیرمیں گنے جا چکے ہیں اور وہ 2025میں مقبوضہ علاقے سے نکل جائے گا۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق مفتی ناصر الاسلام نے سرینگر میں ایک انٹریو میںکہا کہ بھارت کشمیریوں کے خلاف جنگ ہرگز نہیں جیت سکتااور وہ جموںکشمیر کو اب زیادہ دیر تک اپنے ساتھ نہیں رکھ سکتا۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ 2019میں بھارت کی بڑی سیاسی جماعتیں یہ کہنا شروع کر دیں گی کہ کشمیرایک پیچیدہ مسئلہ ہے اور بھارت تمام حربے آزمانے کے باوجود کشمیریوں کی تحریک مزاحمت کو توڑنے میں ناکام رہا ہے لہذا اب اسکا کشمیر میں رہنما بے سود ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح سے عوامی رائے ہموار کرنے کے بعد وہ مقبوضہ علاقے سے نکل جائے گا۔ مفتی ناصر الاسلام نے کہا کہ بھارت کشمیر چھوڑنے سے پہلے یہاں کی نئی نسل اور معیشت کو تباہ کرنے کے ساتھ ساتھ یہاں بڑے پیمانے پر اخلاقی بے راہ روی پھیلائے گا۔ مفتی ناصر الاسلام نے مزید کہا کہ کشمیر میں اس وقت تحریک آزادی عروج پر ہے اور پروفیسرز اور انجینئرز بھی اس راہ میں اپنی جانیں لٹا رہے ہیں۔

متعلقہ عنوان :