فیصل آباد میں اغوا ہونے والی ہندو لڑکی نے اسلام قبول کر لیا

لڑکی نے مسلمان لڑکے سے شادی کا اعتراف بھی کر لیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعرات مئی 14:25

فیصل آباد میں اغوا ہونے والی ہندو لڑکی نے اسلام قبول کر لیا
فیصل آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 10 مئی 2018ء) : فیصل آباد میں اغوا ہونے والی ہندو لڑکی کے معاملے کا ڈراپ سین ہو گیا۔ ہندو برادری سے تعلق رکھنے والی لڑکی ، جسے مبینہ طور پر اغوا کر لیا گیا تھا، نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے اسلام قبول کر کے ایک مسلمان لڑکے سے نکاح کر لیا ہے۔ اسلام قبول کرنے کے بعد بسنتی دیوی کا نام عائشہ رکھا گیا۔ عائشہ فیصل آباد کی زرعی یونیورسٹی میں زوولوجی ڈیپارٹمنٹ کی طالبہ ہے۔

عائشہ گذشتہ ماہ 29 اپریل کو یونیورسٹی سے گھر واپس آتے ہوئے اغوا ہو گئی تھی، گذشتہ ہفتے موصول ہونے والی رپورٹ کے مطابق عائشہ کے بھائی لال کرشن نے سول لائنز پولیس اسٹیشن میں نامعلوم لوگوں کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کروایا تھا، لال کرشن نے بتایا کہ اس کا اپنی بہن سے فون پر بھی رابطہ نہیں ہوا۔

(جاری ہے)

پولیس نے لڑکی کی تلاش شروع کی تو عائشہ نامی نو مسلم لڑکی کو ٹوبہ ٹیک سنگھ سے بازیاب کروالیا گیا۔

بازیابی کے بعد 22 سالہ لڑکی اور اس کے شوہر کو تھانہ سول لائنز میں میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا۔ عائشہ نے بتایا کہ میں نے عدالت کے سامنے اسلام قبول کرنے کے بعد اپنی مرضی سے ذیشان نامی لڑکے سے کورٹ میرج کر لی۔ عائشہ نے موصول ہونے والی دھمکیوں سے خوفزدہ ہو کر حکومت سے اپیل کی کہ وہ عائشہ اور اس کے سسرالیوں کو تحفظ فراہم کریں۔ سول لائنز تھانے کے ایس پی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ لڑکی بالغ ہے اور اس کا شناختی کارڈبھی موجود ہے ، اس کیس پر مزید کارروائی لڑکی کو ایک مرتبہ پھر سے عدالت کے سامنے لے جا کر بیان دلوانے کے بعد اس کے اپنے بیان کی روشنی میں کی جائے گی۔

عائشہ نے اس سے قبل بہاولپور بنچ کے سامنے پیش ہو کر بیان دیا اور کہا کہ میں نے جو کچھ کیا اپنی مرضی سے کیا۔ عائشہ نے کہا کہ میں نے اسلام قبول کر کے بغیر کیس دباؤ کے ذیشان سے شادی کی اور اب عدالت سے رجوع کرنے کی وجہ مجھے اور میرے سسرالیوں کو موصول ہونے والی دھمکیاں ہیں۔ یاد رہے کہ پاکستان میں اس سے قبل بھی کئی ایسے کیسز سامنے آ چکے ہیں۔ جون 2017ء میں ایک ہندو لڑکی کو مبینہ طور پر سندھ میں اغوا کر لیا گیا، جس کے کچھ گھنٹوں بعد ہی رویتا میگھوار نے اسلام قبول کر کے اپنا نام گُل ناز رکھ لیا تھا، اور اگلے ہی دن اس نے میڈیا کے سامنے بیان دیا تھاکہ اس نے بغیر کسی دباؤ کے اسلام قبول کر کے مسلمان لڑکے سے شادی کر لی ہے۔