چین،جاپان اور جنوبی کوریا کا کھلی عالمی معیشت کی تشکیل اور آزادانہ تجارت کے فروغ کا عزم

تینوں کا اقتصادی ترقی کے حصول میں آزادانہ اور کھلی تجارت و سرمایہ کاری کی اہمیت کو تسلیم اور اپنی معیشتوں کو آزاد بنانے ، ہر قسم کی تجارتی تحفظ پسندی کی مخالفت اور کاروباری ماحول کی بہتری کا عزم ظاہر کیا

جمعرات مئی 15:47

چین،جاپان اور جنوبی کوریا کا کھلی عالمی معیشت کی تشکیل اور آزادانہ ..
ٹوکیو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) چین،،جاپان اور جنوبی کوریا نے ایک کھلی عالمی معیشت کی تشکیل اور آزادانہ تجارت کے فروغ کا عزم کرتے ہوئے اقتصادی ترقی کے حصول میں آزادانہ اور کھلی تجارت و سرمایہ کاری کی اہمیت کو تسلیم اور اپنی اپنی معیشتوں کو آزاد بنانے ، ہر قسم کی تجارتی تحفظ پسندی کی مخالفت اور کاروباری ماحول کی بہتری کا عزم ظاہر کیا ۔

چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق چین،،جاپان اور جنوبی کوریا کا رہنما اجلاس ٹوکیو میں منعقد ہوا جس میں چینی وزیر اعظم لی کھہ چھیانگ ، جاپانی وزیر اعظم شینزوابے اور جنوبی کوریا کے صدر مون جے این نے شرکت کی۔ اجلاس کے حوالے سے ایک مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا جس میں تینوں ممالک کی جانب سے یک کھلی عالمی معیشت کی تشکیل اور آزادانہ تجارت کے فروغ کے عزم کا اعادہ کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

اعلامیے میں کہا گیا کہ تینوں ممالک عالمی خوشحالی کو فروغ دینے میں اپنے اہم کردار سے بخوبی آگاہ ہیں۔ فریقین کی جانب سے اقتصادی ترقی کے حصول میں آزادانہ اور کھلی تجارت و سرمایہ کاری کی اہمیت کو تسلیم کیا گیا جبکہ اپنی اپنی معیشتوں کو آزاد بنانے ، ہر قسم کی تجارتی تحفظ پسندی کی مخالفت اور کاروباری ماحول کی بہتری کا عزم ظاہر کیا گیا۔

تینوں ممالک نے عالمی تجارتی تنظیم کی مرکزی حیثیت سے ایک منصفانہ ، آزادانہ ، کھلے ، شفاف ، غیر امتیازی اور اشتراکی کثیر الجہتی تجارتی نظام کی مضبوطی کے لیے مل کر کام کرنے کا عزم ظاہر کیا۔فریقین نے دو طرفہ ، علاقائی اور کثیر الاطرافی تجارتی معاہدوں کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے انہیں عالمگیر تجارتی نظام کی مضبوطی کے لیے اہم قرار دیا۔

متعلقہ عنوان :