اگر نواز شریف کا مقابلہ عمران خان سے نہیں ہے تو۔۔؟ معروف صحافی نے کئی سوالات اٹھا دئیے

نواز شریف عمران خان کے خلاف نہیں تو پھر ریحام خان اور عائشہ گلا لئی کو ان کے خلاف کیوں استعمال کرتے ہیں؟

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 15:02

اگر نواز شریف کا مقابلہ عمران خان سے نہیں ہے تو۔۔؟ معروف صحافی نے کئی ..
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔10مئی 2018ء) معروف کالم نگار منیر احمد بلوچ کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کہتے ہیں کہ میرا پی ٹی آئی چئیر مین عمران خان سے کوئی مقابلہ نہیں لیکن پھر وہ ریحام خان اور عائشہ گلالئی کو عمران خان کے خلاف کیوں استعمال کرتے ہیں تفصیلات کے مطابق معروف کالم نگار منیر احمد بلوچ کا اپنے ایک کالم ’ اگر مقابلہ عمران سے نہیں ہے تو؟‘ میں کہنا ہے کہ میاں نواز شریف آج کل ہر جگہ کہتے ہیں کہ میرا مقابلہ عمران خان سے نہیں ہے۔

ممکن ہے کہ نواز شریف کا دعوی درست ہو لیکن اگر واقعی نواز شریف کا عمران خان سے مقابلہ نہیں ہے۔تو پھرنواز شریف اربوں روپے لگا کر کالج اور یونیورسٹیوں میں لیپ ٹاپ کیوں تقسیم کرتے ہیں۔اگر عمران خان نواز شریف کے لیے خطرہ نہیں ہے تو پھر نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم صفدر کو عمران خان کے خلاف سوشل میڈیا ٹیم کے تنخواداروں کا ہجوم اکھٹا کرنے کی ضرورت کیوں پڑ گئی۔

(جاری ہے)

نواز شریف اگر اپنے بیانات پر غور کریں۔تو پتہ چلے گاکہ آنکھ کھلتے ہی نواز شریف کا نشانہ عمران خان ہوتے ہیں۔اور رات ہونے تک نواز شریف اور ان کی جماعت کے ایک ایک فرد کا نشانہ عمران خان ہوتے ہیں۔اور نواز شریف عمران خان کا مقابلہ کرنے کے لیے محمود خان اچکزئی اور اسفند یار ولی خان کو اپنے گلے لگاتے ہوئے مشیر خاص مقرر کرتے ہیں۔اور کبھی عمران خان کے خلاف عائشہ گلا لئی کو استعمال کیا جاتا ہےتو کبھی عمران خان کے خلاف ریحام خان کا سہارا لیا جاتا ہے۔

نا جانے کس طرح پھر نواز شریف ڈائس پر کھڑے ہو کر خدا کی قسم کھا کر کہہ دیتے ہیں کہ میرا عمران خان سے کوئی مقابلہ نہیں ہے۔یاد رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف نےا یک بار ایک بیان دیا تھا کہ میرا مقابلہ عمران خان یا آصف علی زرادری سے نہیں ہے ۔۔میرا مقابلہ تو خلائی مخلوق سے ہے۔