کمیونٹی کے شرکاء امریکی عوام میں مقبوضہ کشمیر میں ہونیوالی سنگین خلاف ورزیوںکے بارے میں شعور وآگاہی پھیلائیں ،ْسردار مسعود خان

امریکہ کو بحیثیت مستقل ممبرسلامتی کونسل اپنی ذمہ داری پوری کرنی چاہیے ، انسانی حقوق کے علمبردار ہونے کی وجہ سے امریکہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے میں ایک مرکزی کردار ادا کرسکتا ہے ،ْ صدر آزاد کشمیر

جمعرات مئی 16:27

واشنگٹن ڈی سی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) صدر آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے واشنگٹن ڈی سی میں جمعرات کو ایک تقریب میں کشمیری تارکین وطن سے خصوصی خطاب کیا ۔تقریب میں جناب غلام نبی فائی ،کشمیری خواتین و نوجوانان کے علاوہ کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے دیگر معززین نے بھی شرکت کی۔صدر آزادجموں وکشمیر نے اس موقع پر امریکہ میں بسنے والے تارکین وطن کو مسئلہ کشمیر سے وابستگی اوراس مسئلے کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کے لئے اُن کی کاوشوں کو سراہا ۔

انہوںنے خاص طور پر غلام نبی فائی صاحب کی قائدانہ صلاحیتوں کی تعریف کی اور حال ہی میں وائٹ ہاوس کے سامنے کئے جانے والے مظاہرے پر اُن کی کاوشوں کی تعریف کی۔صدر مسعود خان نے کمیونٹی کے شرکاء کو اس بات کی تائید کرواتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی ذمہ داری نبھاتے ہوئے امریکی عوام خصوصاًًنوجوان نسل میں مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی ظلم و جبر و انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوںکے بارے میں شعور وآگاہی پھیلائیں ۔

(جاری ہے)

سردار مسعود خان صدر آزادکشمیر نے کہا کہ بھارت نے گزشتہ 70سال سے مقبوضہ کشمیر میں ظلم و جبر کا بازار گرم کر رکھا ہے ۔ انہوں نے مزید کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج انسانیت کے خلاف جرائم ،نسل کشی اور جنگی جرائم کا ارتکاب کر رہی ہے۔انہوں نے شرکاء سے کہا کہ بھارت نے ایک گھنائونی پالیسی اپنائی ہے جس میں وہ کشمیریوں کے جذبہ حریت کو دبانے کے لئے غیر معمولی تشدد کا استعمال کر رہی ہے ساتھ ہی انہوں نے مذاکرات کے تمام دروازے پاکستان اور حریت رہنمائوںکے لئے بند کر رکھے ہیں تاکہ کشمیریوں کو اُن کا حق حق خوداریت نہ مل سکے ۔

صدر مسعود خان نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ کو بحیثیت مستقل ممبرسلامتی کونسل اپنی ذمہ داری پوری کرنی چاہیے اور انسانی حقوق کے علمبردار ہونے کی وجہ سے امریکہ اس مسئلے کو حل کرنے میں ایک مرکزی کردار ادا کرسکتا ہے ۔