نیب کیسز میں سزا سنائی گئی تو کسی صورت رحم کی اپیل یا معافی نہیں مانگو ں گا ،ْنوازشریف

ْ خلائی مخلوق ستر سے موجود ہے ،ْ اب ان کا مقابلہ زمینی مخلوق سے ہوگا اور خلائی مخلوق کو شکست ہوگی ،ْ دھرنوں میں استعمال ہونے والی طاقتیں بھی خلائی مخلوق سے تعلق رکھتی تھیں ،ْجو بھی الیکشن کی تاخیر کا سوچ رہا ہے اس سے بڑی کوئی سازشی سوچ نہیں ہوسکتی ،ْیہ ملک سے غداری ہے اس پر آرٹیکل 6 لگنی چاہیے ،ْہمارے ایم این ایز اور ایم پی ایز پر پارٹی چھوڑنے کیلئے نیب کے ذریعے دبائو ڈالا جارہاہے ،ْ پارٹی چھوڑنے والا اکیلے ہیں ،ْعوام ان کے ساتھ نہیں ہمارے ساتھ ہیں ،ْ نیب کیسز میں میر ے خلاف کوئی ثبوت ہوتا تو دس دن میں فیصلہ آجاتا ،ْ یہ سزا کیلئے جب تک کوئی بات گھڑ نہ لیں اس وقت تک کیس چلانا چاہتے ہیں ،ْعمران خان کے بندوں نے سینٹ میں تیر پر مہرلگائی ہے ،ْ لگتا ہے جنرل الیکشن میں بھی عمران خان ایسا کرینگے ،ْ سابق وزیر اعظم کے صحافیوں کے سوالوں کے جوابات

جمعرات مئی 16:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن)کے قائدسابق وزیر اعظم محمد نوازشریف نے واضح کیا ہے کہ اگر نیب کیسز میں سزا سنائی گئی تو کسی صورت رحم کی اپیل یا معافی نہیں مانگو ں گا ،ْ خلائی مخلوق ستر سے موجود ہے ،ْ اب ان کا مقابلہ زمینی مخلوق سے ہوگا اور خلائی مخلوق کو شکست ہوگی ،ْ دھرنوں میں استعمال ہونے والی طاقتیں بھی خلائی مخلوق سے تعلق رکھتی تھیں ،ْجو بھی الیکشن کی تاخیر کا سوچ رہا ہے اس سے بڑی کوئی سازشی سوچ نہیں ہوسکتی ،ْیہ ملک سے غداری ہے اس پر آرٹیکل 6 لگنی چاہیے ،ْہمارے ایم این ایز اور ایم پی ایز پر پارٹی چھوڑنے کیلئے نیب کے ذریعے دبائو ڈالا جارہاہے ،ْ پارٹی چھوڑنے والا اکیلے ہیں ،ْعوام ان کے ساتھ نہیں ہمارے ساتھ ہیں ،ْ نیب کیسز میں میر ے خلاف کوئی ثبوت ہوتا تو دس دن میں فیصلہ آجاتا ،ْ یہ سزا کیلئے جب تک کوئی بات گھڑ نہ لیں اس وقت تک کیس چلانا چاہتے ہیں ،ْعمران خان کے بندوں نے سینٹ میں تیر پر مہرلگائی ہے ،ْ لگتا ہے جنرل الیکشن میں بھی عمران خان ایسا کرینگے ۔

(جاری ہے)

جمعرات کو پنجاب ہائوس میں پریس کانفرنس کے بعد صحافیوں کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف نے کہا کہ ہمارے ایم این ایز اور ایم پی ایز کو فوری طورپر مسلم لیگ (ن) کو چھوڑنے کا کہا جارہا ہے ،ْ ہمارے اراکین کو کہا جارہے کہ آپ آزاد الیکشن لڑیں یا پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لیں اگر ایسا نہیں کرینگے تو نیب میں مقدمات بھگتنے کیلئے تیار ہوجائیں ۔

نوازشریف نے کہاکہ الیکشن سے تین ماہ باقی رہ گئے ہیں اور یہ کارروائیاں کون کروا رہا ہے ۔ نوازشریف نے کہاکہ یہ باتیں پارٹی رہنمائوں نے بتائی ہیں جنہوںنے مسلم لیگ (ن)چھوڑنے سے انکار کیا ہے ۔ نوازشریف نے کہاکہ نیب کی جانب سے ہمارے کئی اراکین کے خلاف انوسٹی گیشن بھی شروع کر دی گئی حالانکہ نیب کے قانون میں اس بات کی اجازت نہیں ہے کہ وہ کسی کے کہنے پر کارروائی کرے یا پارٹیاں تبدیل کر انے کیلئے ممبر پر دبائو ڈالے ،ْ یہ عجیب تماشا ہے اس کا ذکر کئی مرتبہ کر چکے ہیں ۔

پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے جنوبی پنجاب کے اراکین کے حوالے سے نوازشریف نے کہا کہ جن لوگوں کو پی ٹی آئی میں شامل کرایا گیا ہے ان میں میں نے ایک دو کو دیکھا ہے باقیوں کی شکلیں بھی نہیں جانتا انہوںنے کہاکہ عوام مسلم لیگ (ن)کے ساتھ ہیں پارٹی چھوڑنے والوں کے ساتھ عوام نہیں ہیں ۔ نوازشریف نے کہاکہ یہ اکیلے پارٹی چھوڑ کر جارہے ہیں پہلے اخباروں میں خبریں چھپتی تھیں کہ فلاں شخص نے ہزاروں بندوں کی کسی پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی ہے اب ایسا نہیں ہے یہ اکیلے پارٹی چھوڑ رہے ہیں عوام ہمارے ساتھ ہیں ،ْ الیکشن میں نتائج آپ کے سامنے آ جائیں گے ۔

نوازشریف نے کہاکہ ستر سالوں سے یہی کچھ ہوتا آرہاہے ،ْ پارٹی چھوڑنے سمجھتے ہیں کہ ان کے خلاف کبھی کیس نہیں کھلے گا ان کی باری ضرور آئے گی ۔ ایک اور سوال پر سابق وزیر اعظم نے کہاکہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے جو تقریر پارلیمنٹ میں کی ہے میں اس سے متفق ہوں ،ْ انہوںنے صحیح بات کی ہے ،ْ وزیر اعظم نے سیاسی جماعتو ں سے کہا ہے کہ آگے کے معاملات درست کریں ۔

ایک سوال پر نوازشریف نے کہا کہ کچھ لوگوں کا خیال تھا کہ اگر نوازشریف کو نیب ریفرنسز میں سز اہو گئی تو وہ صدر مملکت سے رحم کی اپیل کریں گے اور معافی مانگ لیں گے ۔۔نوازشریف نے واضح کیا کہ اگر مجھے سزا سنائی جاتی ہے تو رحم کی اپیل نہیں کرونگا ایسا ذہن میں کبھی خیال بھی نہیں آیا ،ْ کسی معافی مانگنے اور رحم کی اپیل کر نے نہیں جائونگا ۔

ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ اگر کچھ چیزیں ملک کے مفاد میں درست کرنی ہیں تو تمام سیاسی جماعتیں ملکر الیکشن سے کرلیں اور اگر کچھ چیزیں رہ جاتی ہیں تو وہ الیکشن کے بعد درست ہو جائیں گی ۔خلائی مخلوق کے حوالے سے سوال پر نوازشریف نے کہاکہ خلائی مخلوق ستر سے سالوں سے موجود ہے ،ْ اب ان کا اصل مقابلہ زمینی مخلوق سے ہونے والا ہے ،ْاب زمینی مخلوق خلاقی مخلوق کو شکست دے گی ۔

انہوںنے کہاکہ دھرنوں میں استعمال ہونے والی طاقتیں بھی خلائی مخلوق سے تعلق رکھتی تھیں ۔ ایک اور سوال پر سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف نے کہاکہ نیب کیسز میں وہ اپنی بیٹی کے ساتھ تقریباً ستر کے قریب پیشیاں بھگت چکے ہیں ،ْاب ایک ماہ مزید توسیع کر دی گئی ہے ،ْمیر ے خلاف اگر کوئی واقع ثبوت ہوتا تو پہلے دس دن میں فیصلہ ہو چکا ہوتا ،ْ نوماہ سے کیس چل رہا ہے ،ْ کتنے گواہ آئے ہیں ،ْ ابھی تک فیصلہ کیوں نہیں ہونے پارہاہے ،ْ یہ غیر معینہ مدت یا قیامت تک چلانا چاہتے اور سزا کیلئے جب تک یہ کوئی بات گھڑ نہ لیں اس وقت تک کیس چلانا چاہتے ہیں ۔

انہوںنے کہاکہ اس کیس میں میر ے خلاف کوئی کرپشن نہیں ،ْ کک بائیک نہیں ہے اور جن لوگوں کے خلاف کرپشن ،ْ کک بائیک کیسز ہیں انہوںنے پندرہ پندرہ سال سال میں تین تین پیشیاں بھی نہیں بھگتیں ۔ ایک اور سوال پر نوازشریف نے کہاکہ اراکین نہیں پارٹی چھوڑ ی نہیں ان سے چھڑوائی گئی ہے ۔ ایک اور سوال پر نوازشریف نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی کے کٹھ جوڑ کا ثبوت طاہر القادری کا جلسہ ہے ،ْ دونوں وہاں پر آئے تھے اور تقاریر بھی کیں اس کے بعد سینٹ کے الیکشن میں زر داری اور عمران خان نے کٹھ جوڑ کیا ،ْ عمران خان سے پوچھیں تیر کو مہر لگائی تھی یا نہیں لگائی تھی ،ْ اس کے بندوں نے تیر پر مہر لگائی ،ْ عمران خان کہتا تھا کہ زر داری سے ہاتھ ملانا گوارہ نہیں کرتا اس نے تیر پر مہر لگائی ہے اور یہ نہ ہو کہ جنرل الیکشن میں بھی پی پی پی کے نشان پر مہر لگا دیں ۔

میاں نوازشریف نے کہا کہ جو کچھ ہورہا ہے، بار بار کہتے ہیں نہیں ہونا چاہیے ،ْ پاکستان دنیا میں ایک عجیب تماشہ بنتا جارہا ہے۔ایک سوال پر سابق وزیراعظم نے کہا کہ جو بھی الیکشن کی تاخیر کا سوچ رہا ہے اس سے بڑی کوئی سازشی سوچ نہیں ہوسکتی، یہ ملک کے خلاف سازش ہے ایسی سوچ پر پابندیاں لگنی چاہئیں ،ْیہ ملک سے غداری ہے اس پر آرٹیکل 6 لگنی چاہیے۔