سٹی کورٹ مال خانہ آتشزدگی، تحقیقات کے لئے بنائی گئی کمیٹیاں بے سود ثابت

ایک ماہ کا عرصہ مکمل ہونے کے باوجود تاحال تحقیقاتی عمل مکمل ہوسکا اور نہ ہی ذمہ داران کا تعین ہوسکا

جمعرات مئی 18:31

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) سٹی کورٹ کے مال خانے میں لگنے والی آگ کی تحقیقات کے لئے بنائی گئی کمیٹیاں بے سود ثابت، ایک ماہ کا عرصہ مکمل ہونے کے باوجود تاحال تحقیقاتی عمل مکمل ہوسکا اور نہ ہی ذمہ داران کا تعین ہوسکا۔تفصیلات کے مطابق سٹی کورٹ کے مال خانے میں لگنے والی آگ کی تحقیقات کے لئے بنائی گئی کمیٹیاں بے سود ثابت ہوگئیں۔

ایک ماہ کا عمل مکمل ہونے کے باوجود واقعے کی تحقیقات کے لئے بنائی کمیٹیوں کی تحقیقات مکمل نہ ہوسکیں۔ذرائع کے مطابق لاہور فرانزک کی رپورٹ بھی تاحال کمیٹیوں کو موصول نہیں ہوئی جبکہ مال خانے کی سیکورٹی پر تعینات افسران و اہلکاروں کے بیانات قلمبند کرنے کے باوجود بھی تاحال کوئی پیش رفت عمل میں نہیں آئی۔دوسری جانب واقعے کو ایک ماہ عرصہ مکمل ہونے اور واقعہ کا مقدمہ درج ہونے کے باوجود نہ ہی زمہ داران کا تعین ہوسکا ہے اور نہ ہی تاحال مال خانے کے انتظامات سٹی کورٹ کے عملے کے حوالے کئے گئے۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ سٹی کورٹ میں واقع مال خانے میں گزشتہ ماہ 10 اور 11 اپریل کی رات کو اچانک آگ بھڑک اٹھی تھی جس کے بعد واقعے کے تحقیقات کے لئے 3 کمیٹیاں تشکیل دی گئی تھیں۔تشکیل دی جانے والی کمیٹیوں میں 2 کمیٹیاں پولیس افسران کی زیر نگرانی جبکہ ایک کمیٹی جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کے زیرنگرانی تشکیل دی گئی تھی۔مال خانے میں لگنیوالی آگ کے نتیجے 2 اضلاع کی کیس پراپرٹیز مکمل طور پر جل کر خاکستر ہوگئی تھیں جلنے والی کیس پراپرٹیز میں کئی ہائی پروفائل مقدمات کی کیس پراپرٹیز بھی شامل تھیں۔

متعلقہ عنوان :