سعودی فنڈ فارڈویلپمنٹ نے کنگ عبداللہ کیمپس کیلئے 1ارب سے زائد گرانٹ کی منظوری دیدی

وائس چانسلر کی درخواست پر صدر ریاست کی کاوش سے چھتر کلاس میں عالمی معیار کی لیبارٹریز قائم ہوں گی

جمعرات مئی 19:32

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) یونیورسٹی آف آزاد جموں و کشمیر چھتر کلاس میں اسٹیٹ آف دی آرٹ لیبارٹریز کے قیام کے لیئے سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ نے 1ارب 3 کروڑ50لاکھ روپے لاگت کے منصوبے کے لیئے رضا مندی دے دی ہے۔ عالمی معیار کی لیبارٹریز سے تحقیقی اور تخلیقی سرگرمیوں کو تقویت ملے گی اور معیار تعلیم میں مزید اضافہ ہو گا۔

اس ضمن میں وائس چانسلر یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر کلیم عباسی نے ابتدا میں ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں کر کے یہ منصوبہ جمع کروایا،ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے اس کا تکنیکی جائزہ لے کر ابتدائی منظوری دیتے ہوئے اسے سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ سے رضامندی کے حصول کے لیئے حکومت پاکستان کو ارسال کیا ۔اس ضمن میں وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹر کلیم عباسی نے ڈین فیکلٹی آف سائنسز پروفیسر ڈاکٹر محمدقیوم خان اور پروفیسر ڈاکٹر محمد ریاض کے ہمراہ سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ کے حکام کے ساتھ ملاقات کر کے انہیں منصوبے کی اہمیت کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ چھتر کلاس میں عالمی سطح کے کیمپس کی تعمیر کے باوجود معیاری لیبارٹریز قائم نہ ہونے کی صورت میں معیاری تعلیم اور ریسرچ کا خواب ادھورا رہے گا۔

(جاری ہے)

جبکہ طلبہ و طالبات کے تحقیقی اور تخلیقی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لیئے صرف اچھی عمارتیں کافی نہیں ہوتی بلکہ اس کے لیے عالمی سطح کی لیبارٹریز انتہائی ناگزیر ہیں۔ جس پر سعودی فنڈ کے حکام نے اس کی اہمیت و افادیت کو تسلیم کیا۔ بعد ازاں وائس چانسلر یونیورسٹی نے صدر ریاست سردار مسعود خان کو لیبارٹریز کی ضروریات کے حوالے سے آگاہ کیا تو انہوں نے سعودی عرب کے پاکستان میں تعینات سفیر سے ملاقات کر کے اس منصوبے کی اہمیت سے آگاہ کیا جنہوں نے صدر ریاست کی درخواست پر اپنا بھر پورکردار ادا کیا۔

جس کے نتیجے میں سعودی فنڈ فار ڈیلپمنٹ نے سعودی سفیر کے ہمراہ صدر ریاست سے دوبارہ ملاقات کر کے 1ارب 3کروڑ 50 لاکھ روپے کی لاگت کے منصوبے کے لیئے رضامندی دے دی ہے۔ علاوہ ازیں نیلم کیمپس کی تعمیر کے لیئے 193کنال اراضی حکومت آزاد کشمیر کے تعاون سے حاصل کر لی گئی ہے جس کی تعمیر کے لیئے ایک ارب روپے کی لاگت کا منصوبہ بھی حکومت پاکستان کو ارسال کیا جا چکا ہے جس کی منظوری آخری مراحل میں ہے۔

وائس چانسلر یونیورسٹی نے عرصہ 10ماہ میں ان منصوبہ جات کے لیے کلیدی کردار ادا کیا ہے اور اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ جامعہ کشمیر کی ترقی کے لیئے کوئی دقیقہ فرد گزاشت نہیں کریں گے نیز وہ تحقیقی اور تخلیقی سرگرمیوں کو مزید بہتر بنانے کے لیئے عالمی سطح کی لیبارٹریز کے قیام کے ساتھ ساتھ جدید سہولیات کی فراہمی کے لیئے ہر ممکن کردار ادا کریں گے۔وائس چانسلر نے یونیورسٹی کی ترقیاتی منصوبہ جات کی تکمیل کے لیئے صدر ریاست سردار مسعود خان اور وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی خصوصی دلچسپی کو سہراتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ مستقبل میں اُن کے تعاون سے مزید اہم ترقیاتی منصوبہ جات بھی شروع کیئے جائینگے۔۔