بھارتی حکومت تحریک آزادی کو کچلنے کے لئے قتل عام میں خصوصی مہارت رکھنے والے بھارتی سیکورٹی فورسز کے بلیک کیٹ کمانڈوز کو تعینات کر رہی ہے‘

اس فیصلے سے مقبوضہ وادی میں ظلم و ستم اور بربریت میں اضافہ ہو گا قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری محمد یاسین کی مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں پر مظالم ڈھانے کیلئے بلیک کیٹ کمانڈوز تعینات کرنے کے فیصلے پر سخت تشویش کا اظہار

جمعرات مئی 19:33

سٹوک آن ٹرینٹ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری محمد یاسین نے بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں پر مظالم ڈھانے کے لیے بلیک کیٹ کمانڈوز تعینات کرنے کے فیصلے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی حکومت تحریک آزادی کو کچلنے کے لئے قتل عام میں خصوصی مہارت رکھنے والے بھارتی سیکورٹی فورسز کے بلیک کیٹ کمانڈوز کو تعینات کر رہی ہے۔

اس فیصلے سے مقبوضہ وادی میں ظلم و ستم اور بربریت میں اضافہ ہو گا اقوام عالم اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی تنظیمیں اسکا فوری نوٹس لیں ،ایسا نہ ہو کہ کشمیر تو بچ جائے لیکن کشمیری ختم ہو جائیں۔ وہ آج یہاں مختلف وفود سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کی8 لاکھ سے زائد افواج اور ہزاروں پیرا ملٹری فورسز کی تعیناتی کے باوجود ناکامی کا شکار ہو چکی ہے اور اب بلیک کیٹ کمانڈوز تعینات کیے جا رہے ہیں انکو خصوصی طور پر گھر گھر جا کر تلاشی کرنے کے اختیارات دیے گئے ہیں ان کے پاس دیوار سے پار دیکھنے والے ریڈار ۔

(جاری ہے)

سٹا ئپر رائفلز اور دیگر جدید ہتھیاروں کی بڑی کھیپ دی گئی بھارتی حکومت کے اقدامات سے کشمیری عوام پر ظلم و ستم اور بربریت کا اضافہ ہو گا اور چادر اور چاردیواری کی دھجیاں بکھیر دی جائیں گی پاکستان کی حکومت فوری طور پر سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائے اور آزاد کشمیر کی حکومت اس سلسلے میں فوری طور اسمبلی اور کونسل کا مشترکہ اجلاس بلانے اور اسمبلی کے اندر اور باہر کی سیاسی و مذہبی جماعتوں کے قائدین کا اجلاس بلانے اور مشترکہ لائحہ عمل ترتیب دے۔