فاٹا انضمام کے معاملے پر مولانا فضل الرحمان اور محمود خان اچکزئی کی مخالفت

وجہ سے دوسرا اجلاس بھی بے نتیجہ ختم پی ٹی آئی ،ْاے این پی اور نیشنل پارٹی کی فاٹا کے انضمام کی حمایت ،ْ وزیر اعظم کا معاملہ (ن) لیگ کی مرکزی مجلس عاملہ میں لے جانے کا فیصلہ

جمعرات مئی 22:19

فاٹا انضمام کے معاملے پر مولانا فضل الرحمان اور محمود خان اچکزئی کی ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) فاٹا کے انضمام کے معاملے پر سینئر سیاستدان مولانا فضل الرحمان اور محمود خان اچکزئی کی مخالفت وجہ سے دوسرا اجلاس بھی بے نتیجہ ختم ہو گیا ہے۔ جمعرات کو وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے زیرِ صدارت فاٹا کے انضمام کے معاملے پر دوسرا اجلاس منعقد ہوا جس میں پارلیمانی رہنماؤں نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ اس معاملے پر یہ دوسرا اجلاس بھی بے نتیجہ ختم ہو گیا ہے کیونکہ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اور پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی اپنے اپنے موقف پر ڈٹ گئے ہیں تاہم پی ٹی آئی ،ْاے این پی اور نیشنل پارٹی کی طرف سے فاٹا کے انضمام کی حمایت کی گئی۔

سینئر سیاستدانوں کی مخالفت کے بعد وزیرِاعظم نے معاملہ (ن) لیگ کی مرکزی مجلس عاملہ میں لے جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ فاٹا کے انضمام کے معاملے پر پہلا اجلاس بھی مولانا فضل الرحمان اور محمود خان اچکزئی کی مخالفت کے باعث بے نتیجہ ختم ہو گیا تھا۔