چوری شدہ موبائل فونز اب کسی کے کام نہیں آ سکیں گے

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے نئے نظام کو فعال کردیا، چوری شدہ یا گم شدہ موبائل فونز کو شکایت موصول ہوتے ہی فوری مفلوج کر دیا جائے گا

muhammad ali محمد علی جمعرات مئی 19:50

چوری شدہ موبائل فونز اب کسی کے کام نہیں آ سکیں گے
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) چوری اور گم شدہ موبائل فونز کے استعمال کی روک تھام کیلئے پی ٹی اے نے نئے نظام کو فعال کردیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چوری شدہ اور گمشدہ موبائل فونز اب کسی کے کام کے نہیں آ سکیں گے۔ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے نئے نظام کو فعال کردیا ہے۔ نئے نظام کے تحت چوری شدہ یا گم شدہ موبائل فونز کو شکایت موصول ہوتے ہی فوری مفلوج کر دیا جائے گا۔

پاکستان ٹیلی کمیونیکشن اتھارٹی نے موبائل فون کی چوری کے سدباب کے لیے ڈی آئی آر بی ایس سسٹم (ڈیوائس آئیڈنٹیفکیشن رجسٹریشن اینڈ بلاکنگ سسٹم) کا آغاز کردیا ہے۔ جمعرات کے روز اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران چئیرمین پی ٹی اے محمد نوید نے ڈی آئی آر بی ایس سسٹم کا افتتاح کیا۔

(جاری ہے)

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کا کہنا تھا کہ ایسی ڈیوائس حاصل کرلی گئی ہے جس کی مدد سے موبائل فون ڈیوائسز کی رجسٹریشن کی جا سکے گی۔

ڈیوائس آئیڈنٹیفکیشن رجسٹریشن اینڈ بلاکنگ سسٹم کے آنے سے چوری شدہ ڈیوائسز کام نہیں کرسکیں گی۔ اس سسٹم کی بدولت موبائل چوری کا خاتمہ ہوگا اور سروسز کا معیار بھی بہتر ہوگا۔ ڈی آئی آر بی سسٹم سے اسمگلنگ کا خاتمہ بھی ممکن ہو پائے گا اور حکومت کے ریونیو میں بھی اضافہ کیا جا سکے گا۔ ڈی آئی آر بی ایس سسٹم سے نہ صرف ٹیلی کام سیکٹر میں بہتری آئے گی بلکہ ٹیکس محصولات جمع کرنے اور قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کے تعاون سے غیر قانونی ڈیوائسز پکڑنے میں مدد ملےگی۔

چئیرمین پی ٹی اے نے اعلان کیا کہ ڈی آئی آر بی ایس کے پہلے مرحلے کا آغاز کیا جا رہا ہے جو موبائل سسٹم سے منسلک ہوگا۔ اس ڈیوائس کو جی ایس ایم ڈیٹا بیس کے ساتھ منسلک کیا گیا ہے۔ پہلے فیز میں چوری اور گم شدہ ڈیوائسز کو بلاک کیا جائے گا، جبکہ دوسرے فیز میں ایسی ڈیوائسز کی جانچ پڑتال کی جائے گی جو لوگوں کے استعمال میں ہیں۔ اس سسٹم سے صارفین ڈیوائس کا اسٹیٹس معلوم کرسکیں گے۔