اپوزیشن جماعتوں نے وزیراعلی سندھ کی بجٹ تقریر اورنئے مالی سال کے بجٹ کومستردکردیا

حکومت سندھ کا احتساب کیا جائے ، اگلی حکومت پیپلزپارٹی کی نہیں ہوگی آئندہ حکومت ہم بنائیں گے، اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن کے ڈیڑھ سو ارب روپے کرپشن کی نظر ہوگئے ہیں۔ عوام کا پیسہ لوٹا جارہا ہے،کرن فاؤنڈیشن کا پیسہ ان کے جیبوں میں جارہا ہے، نند کمار گوکلانی

جمعرات مئی 22:48

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) اپوزیشن جماعتوں نے وزیراعلی سندھ کی بجٹ تقریر اورنئے مالی سال کے بجٹ کومستردکردیا ہے اورمطالبہ کیا ہے کہ حکومت سندھ کا احتساب کیا جائے ، اگلی حکومت پیپلزپارٹی کی نہیں ہوگی آئندہ حکومت ہم بنائیں گے،قائد حزب اختلاف خواجہ اظہارالحسن نے سندھ اسمبلی کے بجٹ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ مراد علی شاہ کی ہر سال متنازعہ تقریر ہوتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ کیا پیپلزپارٹی اپنی لیڈر شپ کی قربانی سے پورا صوبہ کو لوٹنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگلی حکومت پیپلزپارٹی کی نہیں ہو گی۔ وزیر اعلی نے آج اپنی بجٹ تقریر مختصر کرکے راہ فرار اختیار کی ہے۔ آنے والی حکومت ہمارے اتحاد سے بنے گی۔ خواجہ اظہارالحسن نے کہاکہ حکومت سندھ باقی اضلاع کو چھوڑ کر سیہون کا جواب دے جہاں لوگ پانی کو ترستے ہیں۔

(جاری ہے)

ایم کیو ایم کے رہنما فیصل سبزواری نے کہاکہ اگر نعروں اور دعووں کی بات کی جائے تو پیپلزپارٹی نے کیا کام کیا ہے۔ طاقت کے نشے میں حکمران کہتے ہیں کہ ہم نے شہد اور دودھ کی نہریں بہا دی ہیں۔ پندرہ سو ارب سے ساڑھے سات سو ارب کس کے جیب میں گئے ہیں مشرف کے دور کے بعد سے اب تک صوبائی فنانس کمیشن کا اجلاس نہیں ہوا۔ منصوبوں کوزیرالتوا رکھ کر کرپشن کا بازار گرم کیا گیا ہے۔

آدھے سے زیادہ وزرا نیب کے چکر کاٹ رہے ہیں۔مسلم لیگ فنکشنل کے پارلیمانی لیڈر نند کمارنے کہاکہ سندھ کے ڈیڑھ سو ارب روپے کرپشن کی نظر ہوگئے ہیں۔ عوام کا پیسہ لوٹا جارہا ہے،کرن فاؤنڈیشن کا پیسہ ان کے جیبوں میں جارہا ہے۔ حکومتی بجٹ کو مسترد کرتے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ نیب سے جن وزراء پر کرپشن کے کیسز ہیں نیب انھیں گرفتار کرے ۔طاقت کے نشے میں حکمران کہتے ہیں کہ ہم نے شہد اور دودھ کی نہریں بہا دی ہیں۔

پندرہ سو ارب سے ساڑھے سات سو ارب روپے کس کی جیب میں گئے ہیں۔ تحریک انصاف کے خرم شیرزمان نے کہاکہ دو نمبر جماعت دو نمبر حکومت اور دو نمبر کے بجٹ سے کوئی امید نہیں۔ اٹھارہ سو ارب روپے پیپلزپارٹی کی حکومت کھا گئی ہے۔ سندھ میں پیپلزپارٹی سے چھٹکارا حاصل کریں گے۔ ان کو جتنا آزمائیں گے وہ اتنا ہی لوٹ مار کریں گے۔ وزیر اعلی ٹائی اور سوٹ پہن کر انگریزی جھاڑتا ہے۔ ان میں سے کوئی بھی شخص ملک سے نہیں بھاگ سکے گا جو بھاگا انھیں انٹرپول سے واپس بلائیں گے۔