راولپنڈی،مسلح ڈکیتی کے دوران خاتون ٹیچر کے قتل میںنامزدملزمان کے فرار کے مقدمہ میں گرفتارایس ایچ او تھانہ گنجمنڈی ،اے ایس آئی ندیم ،سب انسپکٹر منظور سمیت 6پولیس اہلکا رکو14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ

جمعرات مئی 23:09

راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ راولپنڈی عمر جاوید ورک نے مسلح ڈکیتی کے دوران خاتون ٹیچر کے قتل میںنامزدملزمان ظہور اور شفیع اللہ کے فرار کے مقدمہ میں گرفتارایس ایچ او تھانہ گنجمنڈی راجہ طاہر ،اے ایس آئی ندیم ،سب انسپکٹر منظور سمیت 6پولیس اہلکاروں کو14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پراڈیالہ جیل بھجواا دیاہے فرار ہونے والے ملزمان ظہور اور شفیع اللہ نے تھانہ رتہ امرال کے علاقے میں ڈکیتی کے دوران خاتون ٹیچر کو مزاحمت پر قتل کر دیا تھا جس پر تھانہ رتہ امرال پولیس نے ملزمان کو گرفتار کرکے تھانہ گنجمنڈی کی حوالات میں بند کیاتھا گزشتہ روزدونوں ملزمان پولیس کی مبینہ ملی بھگت سے تھانہ گنجمنڈی کی حوالات سے فرارہوگئے جس پر ایس ایچ او گنجمنڈی راجہ طاہر،سب انسپکٹر منظور ،اے ایس آئی ندیم اور تین پولیس کانسٹیبلوں کو گرفتار کر کے ان کے خلاف زیر دفعہ 155سی کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا گزشتہ روزگرفتار پولیس اہلکاروں کو عدالت میں پیش کیا گیا جہاں عدالت نے انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا ۔