سندھ میں فراہمی آب اور نکاسی آب کا سارا نظام پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کرنے کا فیصلہ

پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ نے بلدیاتی اداروں سے ملازمین کی فہرستیں طلب کر لیں ہیں ،ذرائع

جمعرات مئی 23:13

جھڈو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) سندھ میں فراہمی آب اور نکاسی آب کا سارا نظام پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے جس کے بعد پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ نے بلدیاتی اداروں سے ملازمین کی فہرستیں طلب کر لیں ہیں ۔

(جاری ہے)

ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پر سابق جسٹس امیر مسلم ہانی کی سربراہی میں قائم کردہ واٹر کمیشن کمیٹی نے سندھ بھر کی واٹر سپلائی اور ڈرینیج اسکیموں کا دورہ کرکے حتمی رپورٹ عدالت کے حوالے کر دی تھی جس کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ بلدیاتی اداروں سے فراہمی و نکاسی آب کا شعبہ واپس لے کر پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کر دیا جائے ، جس کے بعد سیکریٹری پبلک ہیلتھ ریاض میمن نے سندھ بھر کے بلدیاتی اداروں سے ملازمین کی فہرستیں طلب کر لیں ہیں ۔

بتایا گیا ہے کہ مذکورہ ملازمین یکم جولائی سے محکمہ پبلک ہیلتھ کے ما تحت کام کریں گے اور ان کی تنخواہوں کا نظام بھی بلدیاتی اداروں کی بجائے محکمہ پبلک ہیلتھ سے چلایا جائے گا۔ واضح رہے کہ سندھ تمام شہروں ، قصبات اور دیہات میں پینے کے پانی میں فضلہ اور زہریلے کیمیکل پائے گئے تھے جن کی وجہ سے عوام الناس مہلک امراض نے مبتلا ہو رہے ہیں ۔