گورنرسندھ سے میئر کراچی وسیم اختر کی ملاقات، ترقیاتی منصوبوں پر گفتگو

کراچی کی تعمیر و ترقی میں وفاق کا تعاون جاری رہے گا، گورنر سندھ شہر میں وفاق کے تحت 75 ارب روپے سے ترقیاتی کام کئے جائیں گے جن میں لیاری ایکسپریس وے منصوبہ مکمل ہوچکا ہے جبکہ گرین لائن ، کے فور ،ایم نائن اور دیگر ترقیاتی منصوبے مختلف مراحل میں ہیں، گفتگو وفاق کے تعاو ن سے شہر کی ترقی یقینی ہے،شہر کے مکین وفاق کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، میئر وسیم اختر

جمعرات مئی 23:17

گورنرسندھ سے میئر کراچی وسیم اختر کی ملاقات، ترقیاتی منصوبوں پر گفتگو
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) گورنرسندھ محمد زبیر سے گورنر ہاؤس میں میئر کراچی وسیم اختر کی ملاقات۔ وفاق کے تحت شہر میں جاری ترقیاتی منصوبوں ،،کراچی ترقیاتی پیکج اور عوامی فلاح و بہبود کے دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔۔کراچی روشنیوں کا شہر بن رہا ہے، ترقیاتی کام وقت کی اہم ضرورت ہیں اس ضمن میں وفاق کا تعاون جاری رہے گا۔

گورنرسندھ محمد زبیر نے کہا کہ پاکستان کے اقتصادی حب کراچی ایک بار پھر روشنیوں کا شہر بن رہا ہے۔ ہر طرف ادبی ، ثقافتی ، سماجی ، سیاسی ، معاشی ، اقتصادی ، تفریحی ، کھیلوں سمیت فلمی صنعت کی بھرپور سرگرمیاں پروان چڑھتی نظر آرہی ہیں۔ شہر کے باسی رات گئے تک اپنا کاروبار زندگی بغیر کسی رکاوٹ کے انجام دے رہے ہیں۔

(جاری ہے)

گورنرسندھ نے کہا کہ ملک کی معاشی شہ رگ اقتصادی ترقی میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے۔

شہر میں ترقیاتی کام وقت کی اہم ترین ضرورت ہیں۔ موجودہ حکومت شہر کی ترقی و خوشحالی کے لئے بھرپور تعاون ، مدد اور معاونت فراہم کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ شہر میں وفاق کے تحت 75 ارب روپے سے ترقیاتی کام کئے جائیں گے۔ جن میں لیاری ایکسپریس وے منصوبہ مکمل ہوچکا ہے جبکہ گرین لائن ، K-IV ،M-9 اور دیگر ترقیاتی منصوبے مختلف مراحل میں ہیں۔ گذشتہ روز کراچی ترقیاتی پیکج کے تحت چار بڑے منصوبوں کا اعلان کردیا ہے۔

شہر کی ترقی کے لئے امن ، توانائی ،سماجی شعبہ کی ترقی اور انفرااسٹرکچر کی بحالی و ترقی پر وفاقی حکومت بھرپور تعاون فراہم کررہی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ شہر میں جاری ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل سے عوام کو دور جدید کی سہولیات حاصل ہونگی۔ اس موقع پر میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ وفاق کے تعاو ن سے شہر کی ترقی یقینی ہے۔شہر کے مکین وفاق کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور با الخصوص گور نر سندھ محمد زبیر کی کوششوں کو قابل ستائش قرار دیتے ہیں۔ #