سابق چیئرمین سینیٹ نے پی آئی اے انتظامیہ سے فوری طور پہ ملازمین کی تنخواہ جاری کر نے کا مطالبہ کردیا

جمعرات مئی 23:31

سابق چیئرمین سینیٹ نے پی آئی اے انتظامیہ سے فوری طور پہ ملازمین کی ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) سابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے پی آئی اے کی مینجمنٹ سے فوری طور پہ ملازمین کی تنخواہ جاری کر نے کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا ہے کہ پی آئی اے کی مینجمنٹ خصوصاًسی ای او نے حالیہ ہونے والے ریفرنڈم کے نتائج کو تسلیم نہیں کیا ،یہ حکومت بڑے کاروبار کرنے والوں اور بینکاری شعبہ جات کی نمائندہ حکومت ہے، ملازمت پیشہ افراد کی تنخواہ نہ جاری کرنا ان کا گلا گھونٹنے کے مترادف ہے۔

جمعرات کو اپنے ایک بیان میں سینیٹر میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ پی آئی اے کی مینجمنٹ خصوصاًسی ای او نے حالیہ ہونے والے ریفرنڈم کے نتائج کو تسلیم نہیں کیا اور اگر آپ کو یاد ہو کہ جب پیپلز یونیٹی کی سربراہی میں متحدہ اپوزیشن نے الیکشن جیتا تو اس وقت سی ای او نے ہیڈ کوارٹرز میں رینجرز کو طلب کیا تھا اور اب پی آئی اے کی مینجمنٹ نئی منتخب ہونے والی سی بی اے کی حوصلہ شکنی کے لئے جان بوجھ کر لوور اسٹاف کی تنخواہیں جاری کرنے میں تاخیر کررہی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے مزدور پالیسی جاری رکھتے ہوئے حالیہ بجٹ میں ملازمت پیشہ طبقے کے لئے کسی بھی قسم کا ریلیف نہیں رکھا اور کم از کم تنخواہ اور پینشن میں بھی اضافہ نہیں کیا۔ یہ حکومت بڑے کاروبار کرنے والوں کی اور بینکاری شعبہ جات کی نمائندہ حکومت ہے اور اسے اس افراط زر کی بڑھتی ہوئی شرح میں بھی احساس نہیں ہے اور ایسے میں ملازمت پیشہ افراد کی تنخواہ نہ جاری کرنا ان کا گلا گھونٹنے کے مترادف ہے۔میں مطالبہ کرتا ہوں کہ پی آئی اے کی مینجمنٹ فوری طور پہ ملازمین کی تنخواہ جاری کرے اور بہانہ بازی سے گریز کرے۔