مکئی کے پھول آنے سے دانہ بننے تک فصل کو پانی کی کمی نہ آنے دیں،زرعی ماہرین

جمعہ مئی 11:50

فیصل آباد۔11 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) ماہرین زراعت نے کاشتکاروں کو ہدائت کی ہے کہ وہ مکئی کے پھول آنے سے دانہ بننے تک فصل کو پانی کی کمی نہ آنے دیں تاکہ مکئی کی بمپر کراپ کا حصول اور زیادہ سے زیادہ معاشی فائدہ ممکن ہو سکے۔ انہوںنے کہا کہ بہاریہ مکئی کے پھول آنے کے بعد دانہ بننے تک اسے پانی کی شدت سے ضرورت ہوتی ہے لہٰذا اگر مناسب پانی نہ دیا جائے تو دانہ بننے کی صلاحیت میں کمی واقع ہو سکتی ہے۔

انہوںنے کہا کہ فصل پر کونپل کی مکھی اور گڑوئو ں کے حملہ کا بھی خطرہ ہو سکتا ہے لہٰذا اگر کسی جگہ پر ایسی کسی بیماری کی علامات ظاہر ہوں تو فوری طور پر محکمہ زراعت کے فیلڈ سٹاف کی مشاورت سے انسدادی وتدارکی اقدامات کئے جائیں۔انہوںنے کہا کہ کسی بھی اگلی فصل کی بوائی کیلئے خالص اور معیاری بیج انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے اسلئے کاشتکاروں کو چاہیے کہ وہ معیاری بیج کی تیاری کی جانب بھی خصوصی توجہ مرکوز کریں جس کیلئے ضروری ہے کہ بیج خالص قسم کا ، تندرست ، جڑی بوٹیوں سے پاک ہو ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ محکمہ زراعت کی سفارش کردہ اقسام سے اگلی فصل کیلئے بیج کی تیاری بھی انتہائی مفید ثابت ہو سکتی ہے۔انہوںنے کاشتکاروں کو ہدائت کی کہ وہ مکئی کا بیج ایسے کھیتوں سے تیار کریں جہاں 2سے 3 ایکڑ تک مکئی کی کوئی دوسری قسم موجود نہ ہو۔انہوںنے کہا کہ اس سلسلہ میں مزید رہنمائی اور مشاورت کیلئے ماہرین زراعت ، محکمہ زراعت کے فیلڈ سٹاف یا ایگریکلچرل فری ہیلپ لائن سے بھی رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

متعلقہ عنوان :