میں آئندہ انتخابات میں حصہ نہیں لوں گا

مسلم لیگ ن کے اہم رہنما نے آئندہ الیکشن میں حصہ نہ لینے کا اعلان کردیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعہ مئی 12:10

میں آئندہ انتخابات میں حصہ نہیں لوں گا
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 11 مئی 2018ء) : سابق وفاقی وزیر قانون اور مسلم لیگ ن کے اہم رہنما زاہد حامد نے کہا کہ یہ میری آخری بجٹ تقریر ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ آئندہ الیکشن میں میں حصہ نہیں لوں گا بلکہ میری جگہ میرا بیٹا الیکشن لڑے گا۔ زاہد حامد نے کہا کہ میری اور حکومت کی پانچ سالہ گارکردگی کا کریڈٹ نواز شریف کو جاتا ہے ،ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ تقریباً ختم ہو چکی پے۔

کراچی گرین لائن اور دیگر منصوبوں کے لیے فنڈ خوش آئند ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی بہادر اور مسلح افواج کے لیے بھی فنڈ رکھا گیا ہے۔ سی پیک نواز شریف کا ویژن ہے۔ یاد رہے کہ سابق وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے ملک بھر میں مذہبی جماعتوں کے دھرنے اور ملک میں ہونے والے مظاہروں کے باعث وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اپنا استعفیٰ پیش کیا تھا جو منظور کر لیا گیا۔

(جاری ہے)

استعفے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر زاہد حامد نے موقف اختیار کیا کہ میں نے قومی مفاد کی خاطر وزارت سے استعفیٰ دیا اور یہ فیصلہ ذاتی حیثیت میں کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن ایکٹ کا قانون تمام پارلیمانی اور سیاسی جماعتوں نے متفقہ طور پر بنایا تھا،اس ایکٹ میں براہ راست میرا کوئی تعلق نہیں۔واضح رہے کہ فیض آباد پر مذہبی جماعت کے دھرنا مظاہرین کا اولین مطالبہ تھا کہ وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کا استعفیٰ لیا جائے کیونکہ وہ ختم نبوت حلف نامے میں ہونے والی تبدیلی کا ذمہ دار زاہد حامد کو ٹھہرا رہے تھے۔

زاہد حامد کے استعفیٰ دینے کے بعد اسلام آباد میں جاری مذہبی جماعتوں کے دھرنے کے قائدین نے فیض آباد کے علاوہ ملک بھر میں دھرنے اور مظاہروں کا سلسلہ ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔ زاہد حامد کے بیان کے مطابق آئندہ الیکشن میں ان کی جگہ ان کے صاحبزادے الیکشن میں حصہ لیں گے۔