حطار پولیس کی کارروائی ،17 سالہ مغوی لڑکی بازیاب،

جمعہ مئی 12:56

ہری پور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) حطار میں17 سالہ مغوی لڑکی کو پولیس نے بازیاب کروا لیا ہے۔ حطار پولیس کے اے ایس آئی طارق عزیز نے نشاندہی پر چھاپہ مار کر خورشید نامی ملزم کے گھر سے مغوی لڑکی کو بازیاب کرا لیا، ایک ملزم کو گرفتا کر لیا گیا، پولیس نے مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔ تھانہ حطار میں رپورٹ درج کرواتے ہوئے حطار پڑائو چوک کی رہائشی مسماة نسرین بی بی زوجہ محمد خسرو نے موقف اختیار کیا کہ وہ اپنی بیٹی کے ہمراہ اپنے گھر میں سو رہی تھی جبکہ اس کا خاوند بسلسلہ روزگار کشمیر میں تھا۔

بدھ اور جمعرات کی درمیان رات سوا دو بجے کے قریب کسی نے دروازہ کھٹکھٹیایا، دروازہ کھولنے پر خورشید ولد محبت، عقیل ولد عدالت،، تصور عامر پسران نامعلوم، رضیہ بی بی زوجہ خورشید، مسماة منی اور نیلہ جو عدالت کی بہو ہیں، مسماة حمیداں زوجہ عدالت،، مسماة کنیز اور مسماة ثانیہ دختر عدالت نے گھر میں گھس کر اس کے اوپر تشدد کیا اور سامان بھی توڑ دیا۔

(جاری ہے)

تشدد سے وہ خود بھی زخمی ہو گئیں جبکہ مذکورہ بالا افراد اس کی 17 سالہ بیٹی ماریہ کو اغواء کر کے لے گئے۔ حطار پولیس کے اے ایس آئی طارق عزیز نے مع نفری خورشید نامی اغواء کار کے گھر پر چھاپہ زنی کرتے ہوئے مغویہ مسماة ماریہ کو بازیاب کر کے ملزم خورشید کو گرفتار کر لیا جبکہ دیگر ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپہ زنی کا سلسلہ جاری ہے۔ حطار پولیس نے نامزد ملزمان کے خلاف زیر دفعات 452.365/148/147 مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔