چیئرمین نیب کے معاملے پر پیچھے نہیں ہٹیں گے ،ْآمروں کے دور میں بھی ایسا نہیں ہوا جوآج ہورہا ہے ،ْنوازشریف

نیب کی جانب سے جاری ہونے والا اعلامیہ چھوٹا نہیں کافی سنجیدہ معاملہ ہے ،ْ مجھے تاحیات نا اہل کر نے والے ملک سے متعلق سوچیں ،ْ میڈیا سے گفتگو

جمعہ مئی 13:30

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن)کے قائد ،ْ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہاہے کہ چیئرمین نیب کے معاملے پر پیچھے نہیں ہٹیں گے، آمروں کے دور میں بھی ایسا نہیں دیکھا جو آج ہورہا ہے ،ْنیب کی جانب سے جاری ہونے والا اعلامیہ چھوٹا نہیں کافی سنجیدہ معاملہ ہے ۔جمعہ کو احتساب عدالت کے کمرے میں صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کے دوران نواز شریف نے کہا کہ چیئرمین نیب کی جانب سے جاری ہونے والا اعلامیہ چھوٹا نہیں بلکہ کافی سنجیدہ معاملہ ہے اور اس معاملے پر ہم نے پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس بلایا ہے جس کا مقصد چیئرمین نیب کا معاملہ زیربحث لانا ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ مجھے وزارت عظمیٰ سے محروم کیا گیا، پارٹی صدارت سے تاحیات نااہلی کا فیصلہ بھی صادر کردیا گیا، جو یہ سب کر رہے ہیں ان کا کام ہے کہ وہ ملک سے متعلق سوچیں۔

(جاری ہے)

سابق وزیراعظم نے کہا کہ چیئرمین نیب کے معاملے پر پیچھے نہیں ہٹیں گے، یہ چھوٹا نہیں بلکہ کافی سنجیدہ معاملہ ہے، اس سے زیادہ اب حالات کیا خراب ہوں گے، آمروں کے دور میں بھی ایسا نہیں دیکھا جو ہو رہا ہے۔

مسلم لیگ (ن) کے قائد نے کہا کہ موجودہ حالات پر گزشتہ روز وزیراعظم سے بات ہوئی ہے، پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں آئندہ کی حکمت عملی پر بات ہوگی۔۔نواز شریف نے احتساب عدالت میں معنی خیز گفتگو اور ساتھ ہی ایک واقعہ بھی سنا دیا کہ راجن پور کے ایس پی نے سپاہی سے کہا ،ْتھانے میں صفائی نہیں ہوئی، تیرا تبادلہ کردوں گا ،ْسپاہی نے برجستہ جواب دیا کہ جناب جو مرضی کریں ،ْراجن پورکے آگے کوئی تھانہ نہیں اور سپاہی سے نیچے کوئی رینک نہیں ہے۔