ن لیگ نے ’پنجاب بچاو‘ کے لیے اہم حکمت عملی تیار کر لی

ن لیگ کا ’پنجاب بچاو‘ کے لیے پوری قوت لگانے کا فیصلہ،باقی صوبوں میں صرف سیاسی ساکھ بحال رکھنے کے لیے جلسے کرنے کا فیصلہ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ مئی 14:46

ن لیگ نے ’پنجاب بچاو‘ کے لیے اہم حکمت عملی تیار کر لی
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔11مئی 2018ء) پاکستان مسلم لیگ ن نے ’پنجاب بچاو‘ کے لیے پوری قوت لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔جب کہ پاکستان مسلم لیگ ن اس متعلق دوسرے صوبوں میں صرف سیاسی ساکھ بحال رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔قومی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق وفاق کو چھوڑو پنجاب بچاو کا فیصلہ کیا ہے۔ ۔۔مسلم لیگ ن نے پوری قوت پنجاب میں لگانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

دوسرے صوبوں کی بجائے تمام سیاسی قوت، اثرورسوخ پنجاب میں استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔دیگر صوبوں میں صرف سیاسی ساکھ بحال کرنے کے لیے جلسے کیے جائیں گے۔۔ن لیگ کے مصدقہ ذرائع کا کہنا ہے کہ بہت سے اراکین اسمبلی کی طرف سے پارٹی چھوڑ کر جانے،نیب کی کاروائیوں کے بعد پنجاب میں ن لیگ نے کمزور پوزیشن کو مضبوط کرنے کے لیے ساری توجہ پنجاب پر مرکوز رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

(جاری ہے)

اور اس ضمن میں قائد ن لیگ نواز شریف ، اور ان کی صاحبزادی مریم نواز،، وزیر اعلی پنجاب و صدر ن لیگ شہباز شریف اور دیگر رہنما زیادہ جلسے اور جلوسوں کو پنجاب کی حد تک رکھیں گے۔لیگی قیادت نے جنوبی،وسطی پنجاب کے بڑے گروپوں،برادریوں،،تحریک انصاف،،،پیپلز پارٹی سے ناراض گروپوں کے ساتھ رابطے شروع کر دئیے ہیں۔ایسے تمام حلقے جہاں ن لیگ کے قومی اسمبلی نسشت پر تگڑے امیدوار ہیں،انہیں صوبائی حلقوں میں الیکشن لڑنے کا کہا جا رہا ہے۔

ایک ا ہم شخصیت ، سابق سینیٹر سعود مجید کو یہ خصوصی ٹاسک دیا گیا ہے۔کہ وہ جنوبی پنجاب میں تگڑے امیدواروں،گروپوں سے رابطے کریں۔اور اس بات کی یقین دہانی کرائیں کہ اگر وہ الیکشن پاکستان مسلم لیگ ن کی طرف سے لڑیں گے تو ان کو بھاری بھاری فنڈنگ کی جائے گی۔رحیم یار خان،،دنیا پور اور دیگر اضلاع کے حوالے سے شریف خاندان کے ایک عزیز کو یہ ٹاسک دیا گیا ہے کہ وہ بھی ان علاقوں میں مضبوط امیدواروں کو قابو کریں۔۔پاکستان مسلم لیگ ن نے جنوبی پنجاب کے پانچ بڑے بیوروکریٹس کی فیملیز کو بھی ن لیگ کی ٹکٹیں دینے کا فیصلہ کیا ہے۔اس کے بدلے ان سے مدد مانگی گئی ہے کہ وہ مضبوط گروپوں کو ن لیگ کے ساتھ ملائیں گے۔