لاہور ہائیکورٹ نے قصورمیں عدلیہ مخالف ریلی نکالنے پر 6ملزمان پر فرد جرم عائد کر دی‘ ملزمان کا صحت جرم سے انکار

غیر دانستہ طور پر غلطی ہوگئی ‘معاف کردیا جائے ‘ملزم جمیل خان تمہارا لیڈر بھی سارا دن یہی کام کرتا ہے‘ یہ کورٹ آف لا ہے‘ کسی کیخلاف فیصلہ نہیں ہوگا‘جسٹس مظاہر علی نقوی کے ریمارکس

جمعہ مئی 15:39

لاہور ہائیکورٹ نے قصورمیں عدلیہ مخالف ریلی نکالنے پر 6ملزمان پر فرد ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے قصورمیں عدلیہ مخالف ریلی نکالنے پر ن لیگ کے ایم این اے شیخ وسیم اورایم پی اے نعیم صفدرسمیت 6 ملزمان پرفردجرم عائدکر دی جبکہ ملزمان نے صحت جرم سے انکار کر دیا۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں جسٹس مظاہر علی نقوی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے قصور میں عدلیہ مخالف ریلی کے کیس کی سماعت کی۔

(جاری ہے)

عدالت کی جانب سے (ن) لیگ کے ایم این اے شیخ وسیم اورایم پی اے نعیم صفدرسمیت 6 ملزمان پرفردجرم عائدکر دی گئی ، پراسیکیوٹر نے عدالت میں فرد جرم پڑھ کر سنائی تو ملزمان نے صحت جرم سے انکار کردیا۔ عدالت کی جانب سے حکم دیا گیا کہ تمام ملزمان 7روز میں جواب جمع کرائیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ سماعت پر ملزمان نے موقف اختیار کیا تھا کہ ان کا کوئی دفاع نہیں ، وہ اپنے فعل کی معافی مانگتے ہیں۔

جمعہ کو سماعت کے دوران ملزم جمیل خان نے کہا کہ ان سے غیر دانستہ طور پر غلطی ہوگئی انہیں معاف کردیا جائے جس پر عدالت نے ریمارکس دیے کہ تمہارا لیڈر بھی سارا دن یہی کام کرتا ہے، یہ کورٹ آف لا ہے ، کسی کے خلاف فیصلہ نہیں ہوگا۔ لاہور ہائیکورٹ نے عدلیہ مخالف ریلی کے کیس کی مزید سماعت 18 مئی تک ملتوی کردی۔