فیس بک ہیک کرکے 200 سے زائد خواتین ڈاکٹرز کو بلیک میل کرنے اور بھتہ وصول کرنے کے الزام میں گرفتار ملزم عبدالوہاب علوی کے خلاف کیس کی سماعت 16 مئی تک ملتوی

ایف آئی اے نے آڈیو اور آواز میچ کرنے کی تصدیق کر دی، ملزم کے لیپ ٹاپ سے 200 سے زائد آڈیو کالز، 66 سے زائد قابل اعتراض ویڈیوز ‘ 2000 سے زائد قابل اعتراض تصاویر برآمد کی گئیں، ایف آئی اے افسر کا عدالت میں بیان

جمعہ مئی 16:20

لاہور۔11 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) لاہورکی انسدادِ دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے فیس بک ہیک کرکے 200 سے زائد خواتین ڈاکٹرز کو بلیک میل کرنے اور ان سے بھتہ وصول کرنے کے الزام میں گرفتار ملزم عبدالوہاب علوی کے خلاف کیس کی سماعت 16 مئی تک ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر فریقین کے وکلاء کو حتمی دلائل پیش کرنے کیلئے طلب کر لیا۔

جمعہ کو انسدادِ دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج شیخ سجاد احمد نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزار ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری ڈاکٹر سیدسلمان کاظمی کے وکیل نے بتایا کہ فرانزک رپورٹ میں ملزم کی آڈیو آواز میچ کر چکی ہے اور ایف آئی اے نے تمام ریکارڈ کی فرانزک رپورٹ عدالت میں جمع کروا دی ہے۔ عدالت میں ایف آئی اے کے افسر نے آڈیو آواز کی تصدیق کر دی اور بتایا کہ لیپ ٹاپ سے ملنے وا لی آڈیو گفتگو 95 فیصد ملزم کی آواز سے میچ کرتی ہے اور ملزم کے لیپ ٹاپ سے 200 سے زائد آڈیو کالز برآمد کی ہیں‘ ملزم کے قبضے سے حاصل ہونے والے میموری کارڈز اور لیپ ٹاپ سے برآمد آڈیوز کا فرانزک کیا گیا‘ ملزم کے قبضے سے 66 سے زائد قابل اعتراض ویڈیوز ‘ 2000 سے زائد قابل اعتراض تصاویر برآمد کی گئیں جبکہ 266 آڈیو کالز، 25 موبائل ریچارج کوڈ وغیرہ اس کے لیپ ٹاپ میں بھی ہیں۔

(جاری ہے)

پراسیکیوشن نے عدالت کو بتایا کہ ملزم ایجنسیوں کا جعلی افسر بن کر بھی کارروائیاں کرتا رہا اور ملزم سابقہ ریکارڈ یافتہ ہے، اس کیخلاف خاتون اور بچوں کے اغواء کے مقدمات بھی درج ہیں۔ عدالت میں اب تک 22 گواہان اپنا بیان قلمبند کروا چکے ہیں جن میں 5 خواتین ڈاکٹرز اور ایک نرس بھی شامل ہیں۔