الیکشن کمیشن نے ملک بھرکی رجسٹرڈ 110 سیاسی جماعتوں سے انتخابی نشان کے لیے درخواستیں مانگ لیں

Mian Nadeem میاں محمد ندیم جمعہ مئی 16:24

الیکشن کمیشن نے ملک بھرکی رجسٹرڈ 110 سیاسی جماعتوں سے انتخابی نشان کے ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔11 مئی۔2018ء) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ملک بھرکی رجسٹرڈ 110 سیاسی جماعتوں سے انتخابی نشان کے لیے درخواستیں مانگ لی ہیں۔ الیکشن کمیشن نے آئندہ انتخابات کے لیے ملک بھرکی 110 رجسٹرڈ سیاسی جماعتوں سے انتخابی نشان کے حصول کے لیے درخواستیں طلب کرلی ہیں۔۔الیکشن ایکٹ کے تحت تمام سیاسی جماعتیں 5 فیصد ٹکٹ خواتین کودینے کی پابند ہیں، اس کے علاوہ سیاسی جماعتیں انٹرا پارٹی انتخابات اور گوشوارے جمع کرانے کی بھی پابند ہیں۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ تمام جماعتیں درخواستوں کے ساتھ خواتین کوکم ازکم 5 فیصد ٹکٹ دینے کے حلف نامے اوردیگرلازم دستاویزات منسلک کئے جائیں، ایسا نہ کرنے والی سیاسی جماعتوں کو انتخابی نشان تفویض نہیں کیا جائے گا۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ گزشتہ روزعام انتخابات 2018 کے لئے الیکشن کمیشن نے واٹر مارک بیلٹ پیپپرز کی چھپائی کے لیے مخصوص کاغذ منگوا یا تھا، مخصوص کاغذ کی درآمد پر 1 ارب سے زائد کے اخراجات آئے‘ عام انتخابات میں سیکورٹی فیچرز والے واٹر مارک بیلٹ پیپر استعمال کیے جائیں گے۔

واٹر مارک بیلٹ پیپپرز کی چھپائی کے لیے مخصوص کاغذ پرنٹنگ کارپوریشن آف پاکستان کے ذریعے منگوایا گیا ہے،ذرائع الیکشن کمیشن کے مطابق بیلٹ پیپر کا مخصوص کاغذ فرانس اور برطانیہ سے درآمد کیا گیا۔بیلٹ پیپر کی چھپائی پر بھی 1 ارب سے زائد اخراجات آئیں گے، عام انتخابات میں 21 کروڑ کے قریب بیلٹ پیپر چھاپے جائیں گے۔21 کروڑ بیلٹ پیپر کی مکمل تیاری پر 2 ارب سے زائد کے اخراجات ہوں گے،واٹر مارک بیلٹ پیپر قومی اسمبلی کے لیے سبز، صوبائی اسمبلی کے لیے سفید ہو گا۔

دوسری جانب ایک نجی ٹی وی جانب سے ذرائع کے حوالے سے دعوی کیا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے آئندہ عام انتخابات کو شفا ف بنانے کیلئے انتخابی عملے سے حلف لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ نجی ٹی وی کے مطابق عام انتخابات کے حوالے سے الیکشن کمیشن نے انتخابی عملے سے حلف لینے کا فیصلہ کیا ہے ، انتخابی ڈیوٹی پر تعینات کرنے سے پہلے انتخابی عملے سے حلف لیا جائے گا- الیکشن کمیشن کی جانب سے تیار کردہ پرفارما پر حلف لیا جائے گا جس میں عملے کو انتخابی قانون 2017 پر سختی سے عمل کرنے کی تلقین کی جائے گی جبکہ کسی نوعیت کی خلاف ورزی کی صورت میں کارروائی بھی کی جائے گی۔

واضح رہے 85 سے 90 ہزار پولنگ سٹیشنز پر تعینات انتخابی عملہ کی تربیت کا سلسلہ جاری ہے، جس میں عملے کو انتخابی قانون 2017 کی متعلقہ شقوں کے حوالے سے آگاہی دی جارہی ہے جبکہ انتخابی عمل کے حوالے سے خصوصی کتابچے بھی شائع کئے جائیں گے تاکہ آگاہی کو یقینی بنایا جا سکے۔