جاپان مسئلہ کشمیر حل کرانے کے لئے اسلئے اہم ملک ہے کیونکہ وہ پاکستان اور بھارت کا سب سے بڑا ڈونر ملک ہے ،ْ بیرسٹر سلطان چوہدری

جمعہ مئی 16:59

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدربیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ جاپان مسئلہ کشمیر حل کرانے کے لئے اسلئے بھی اہم ملک ہے کیونکہ وہ پاکستان اور بھارت کا سب سے بڑا ڈونر ملک ہے اور اسکے ان دونوں ممالک سے دوستانہ تعلقات ہیں۔جاپان دوسری جنگ عظیم میں ایٹمی تباہ کاری سے گزر چکا ہے اور 1946 ء میں ہیرو شیما اور ناگا ساکی میں ایٹم بم کی تباہ کاریوں کا سامنا کرنا پڑا۔

پاکستان اور بھارت دونوں ایٹمی طاقتیں ہیں اور دونوں ممالک کے درمیان چھوٹا یا بڑا حادثہ ایک بڑی جنگ کا پیش خیمہ ثابت ہو سکتا ہے جو جنوبی ایشیاء سمیت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے اور اگر خدانخواستہ تیسری عالمی جنگ ہوتی ہے تو یہ ایٹمی ہو سکتی ہے۔

(جاری ہے)

لہذا جاپان مسئلہ کشمیر حل کرانے کے لئے اپنا کردارادا کرے اور پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر پر ثالثی کا کردار ادا کرسکتا ہے۔

اسی طرح مقبوضہ کشمیر میں بھی انسانی حقوق کی پامالی ہو رہی ہے اور سئیز فائر لائن پر جاری بھارتی خلاف ورزیوں کو رکوانے کے لئے بھی جاپان اپنا کردارادا کرے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے جمعہ کو اسلام آباد میں اپنی رہائشگاہ پر جاپان کے سفیر جوتا یاماموتو (Jota Yamamoto)سے ایک تفصیلی ملاقات میں کیا۔بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ اگرچہ میں نے یورپی ممالک بالخصوص جرمنی سے بھی مسئلہ کشمیر پر ثالثی کے بارے میں کہا ہے۔ لیکن ان کا کہنا ہے کہ اگر کوئی ایشیائی ملک ہمارا ساتھ دے تو ہم اسکے ساتھ ملکر اس سلسلے میں کوئی کردارادا کر سکتے ہیں۔لہذا جاپان مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔