پاکستان کو امریکی سفارتکاروں کی نقل و حرکت پر بہت پہلے پابندی عائد کر نی چاہیے تھی، ریاض حسین پیرزادہ

امریکہ پاکستان کے ہمسایہ ممالک کے زریعے پاکستان کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی کرتا ہے، یہ سفارتکاری کے اصولوں کے خلاف ہے،18ویں ترمیم کے بعد وفاق کھیلوں کے معاملے میں صوبوں کے معاملات میں دخل اندازی نہیں کر سکتا،نیب میں شریف خاندان کے خلاف بڑے مقدمات چل رہے ہیں ،نیب کو بہت احتیاط کرنے کی ضرورت ہے وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو

جمعہ مئی 18:29

پاکستان کو امریکی سفارتکاروں کی نقل و حرکت پر بہت پہلے پابندی عائد ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ ریاض حسین پیرزادہ نے کہاہے کہ پاکستان کو امریکی سفارتکاروں کی نقل و حرکت پر بہت پہلے پابندی عائد کر دینی چاہیے تھی،،امریکہ پاکستان کے ہمسایہ ممالک کے زریعے پاکستان کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی کرتا ہے جو سفارتکاری کے اصولوں کے خلاف ہے،18ویں ترمیم کے بعد وفاق کھیلوں کے معاملے میں صوبوں کے معاملات میں دخل اندازی نہیں کر سکتا،نیب میں شریف خاندان کے خلاف بڑے مقدمات چل رہے ہیں نیب کو بہت احتیاط کرنے کی ضرورت ہے۔

وہ جمعہ کو پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ نیب پہلے تحقیقات کرے اور اگر کوئی ثبوت ملے تو پریس ریلیز جاری کرنی چاہییے۔

(جاری ہے)

نواز شریف ملک کے بڑے لیڈر ہیں ان کے خلاف بغیر ثبوت اداروں کی جانب سے الزام لگانا افسوسناک ہے۔نیب میں شریف خاندان کے خلاف بڑے مقدمات چل رہے ہیں، اس لیے نیب کو بہت احتیات کرنے کی ضرورت ہے۔

18ویں ترمیم کے بعد وفاق کھیلوں کے معاملے میں صوبوں کے معاملات میں دخل اندازی نہیں کر سکتا۔ اپریکہ نے ساری دنیا میں دہشتگرد پیدا کیے ہیں اور پاکستان کے حالات خراب کرنے میں بھی امریکہ کا بڑا کردار ہے۔ پاکستان کو امریکی سفارتکاروں کی نقل و حرکت پر بہت پہلے پابندی عائد کر دینی چاہیے تھی۔ امریکہ پاکستان کے ہمسایہ ممالک کے زریعے پاکستان کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی کرتا ہے جو سفارتکاری کے اصولوں کے خلاف ہی