نوازشریف کوبھٹو قراردینے پرپیپلزپارٹی کواحتجاج کرناچاہیےتھا

شریف برادران رات کوبیٹھ کرطےکرتےہیں کہ کس نے کیا کہنا ہے؟ مجھے شرمندگی ہوتی ہےکہ محمود اچکزئی کو بڑا بندہ سمجھتا تھا۔ تجزیہ کارراؤف کلاسرا کی نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ مئی 18:30

نوازشریف کوبھٹو قراردینے پرپیپلزپارٹی کواحتجاج کرناچاہیےتھا
لاہور(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11مئی 2018ء) : سینئر تجزیہ کار راؤف کلاسرا نے کہا ہے کہ نوازشریف کو بھٹو قرار دینے پرپیپلزپارٹی کواحتجاج کرنا چاہیے تھا،،شریف برادران رات کو بیٹھ کرطے کرتے ہیں کہ کس نے کیا کہنا ہے؟مجھے شرمندگی ہوتی ہے کہ محمود اچکزئی کو بڑا بندہ سمجھتا تھا۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے راؤف کلاسرا نے کہا کہ مشاہد حسین سید خلائی مخلوق کے ہی نمائندے رہے۔

خلائی مخلوق کا نمائندہ آج بھی نوازشریف کی ساتھ بیٹھا ہوا تھا۔۔شریف برادران رات کو بیٹھ کرطے کرتے ہیں کہ کس نے کیا کہنا ہے؟انہوں نے کہاکہ مجھے شرمندگی ہوتی ہے کہ محمود اچکزئی کو بڑا بندہ سمجھتا تھا۔ ایک وقت تھا جب محموداچکزئی تقریر کرتے تھے توسب غور سے سنتے تھے لیکن اب جب محمود اچکزئی تقریر شروع کرتے ہیں توپارلیمنٹ سے لوگ باہر نکلنا شروع ہوجاتے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ نوازشریف کو بھٹو قرار دینے پرپیپلزپارٹی کواحتجاج کرنا چاہیے تھا۔رؤف کلاسرا نے بھارت میں ایک کیس کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ 13بھارتی بینکوں نے وجے مالیا کیخلاف ڈیڑھ ارب ڈالر کیس برطانیہ میں جیتا۔ ینڈیا ہمارا ہمسایہ ملک ہے وہاں پرکوئی پیسا چوری کرکے باہر لے جائے تووہ پیچھا کرکے واپس لاتے ہیں لیکن ہمارے ہاں منی لانڈرنگ کرنے والوں کی حکومتیں ہی دفاع کرتی ہیں۔

اس موقع پر تجزیہ کار عامر متین نے کہا کہ نیب کی طرف سے بڑی غلطی ہوئی ہے۔۔نوازشریف کی ایک پریس کانفرنس سے صورتحال نہیں بدل سکتی۔اصغرخان کیس نوازشریف کا بیانیہ جھوٹا ثابت کرنے کیلئے کافی ہے۔۔اصغر خان کیس میں نوازشریف ملزم نہیں مجرم ہیں۔۔نوازشریف نے خود خلائی مخلوق سے مدد لی اور خلائی مخلوق کے لاڈلے بھی رہے۔۔نوازشریف کے لالچ کا اندازہ لگائیں کہ 35لاکھ لے لیے تھے۔