عدلیہ مخالف تقاریر،لیگی اراکین اسمبلی سمیت مقامی رہنمائوں پر فرد جرم عائد

جمعہ مئی 19:58

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی فل بنچ نے عدلیہ مخالف احتجاج اور ریلیاں نکالنے پر مسلم لیگ(ن) کے ارکان اسمبلی سمیت قصور کے مقامی رہنماوں پر فرد جرم عائد کر دی ہے اور تمام ملزموں کو جواب دینے کیلئے 7 دنوں کی مہلت دے دی ہے۔ فل بنچ نے مسلم لیگ(ن) کے رکن قومی اسمبلی شیخ وسیم اور رکن پنجاب اسمبلی نعیم صفدر سمیت 6 افراد پر فرد جرم عائد کی۔

ارکان اسمبلی نے صحت جرم سے انکار کر دیا۔مقامی رہنما ناصر خان نے کہا کہ پہلے بھی عدلیہ کا احترام کرتے تھے اور اب بھی کرتے ہیں جس پر بنچ نے باور کرایا کہ معلوم ہے یہ معاشرہ ہے ہم بھی کسی سیارے سے نہیں آئے۔ مقامی رہنما جمیل خان نے کہا کہ غلطی ہوئی ہے اور غیر دانستہ طور پر یہ جرم ہوا۔

(جاری ہے)

فل بنچ نے ریمارکس دیئے کہ آپ کا لیڈر بھی سارا دن یہی کام کرتا ہے۔

تین ملزموں کے وکلاء کی جانب سے غیر مشروط معافی کی استدعا کی گئی جس پر فل بنچ نے قرار دیا یہ کورٹ آف لاء ہے یہاں کسی کے خلاف فیصلہ نہیں ہوگا۔ قانون کی حکمرانی ہوگی۔۔لاہور ہائیکورٹ کے فل بنچ نے ارکان اسمبلی کیخلاف توہین عدالت کی مزید کارروائی 18 مئی تک ملتوی کر دی اور بنچ کے سربراہ جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے قرار دیا کہ قومی مفاد اور قانون کے تحفظ کیلئے موجود ہیں۔