رمضان ٹرانسمیشن میں جوا ، لاٹری ، ناچ گانے اور سرکس پر پابندی کا اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ قابل صد تحسین ہے،حافظ عاکف سعید

جمعہ مئی 22:09

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) رمضان ٹرانسمیشن میں جوا ، لاٹری ، ناچ گانے اور سرکس پر پابندی کا اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ قابل صد تحسین ہے ۔ یہ بات تنظیم اسلامی کے امیر حافظ عاکف سعید نے اپنے ایک بیان میں کہی ۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ایک بار پھر دینی حمیت اور اسلام سے اپنے گہرے لگاؤ کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک ایسا فیصلہ دیا ہے جس سے گمراہی کا درس دینے والے بے راہرو میڈیا کو نکیل ڈالنے کا آغاز ہو سکتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ معزز جج اس سے پہلے ختم نبوت کے حوالے سے بھی ایک ایسا ایمان افروز فیصلہ دے چکے ہیں جسے عدلیہ کی تاریخ کا ایک روشن اور سنہرا باب قرار دیا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ محترم جج کی یہ بات صد فی صد درست ہے کہ کرکٹ میچ پر تبصرہ کرنے کے لیے تو بیرون ملک سے ماہرین بلائے جاتے ہیں لیکن اسلامی موضوعات پر گفتگو کرنے کے لیے اداکاروں اور کھلاڑیوں کو بٹھا دیا جاتا ہے ۔

(جاری ہے)

جو مذہب کا حلیہ بگاڑ دیتے ہیں ۔ یہ لوگ دین کی ابتدائی تعلیم کی بھی شُدبُد نہیں رکھتے ۔ اس سے عام مسلمان بری طرح کنفیوز ہو جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب انتظامیہ کا فرض ہے کہ معزز جج کے احکامات کو وزارت اطلاعات اور پیمرا کے ذریعے رو بہ عمل لایا جائے اور ان احکامات کی خلاف ورزی کرنے والوں کو سخت سزا دی جائے تاکہ دینی پروگرام کے نام پر اسلامی شعائر کا استہزا بند ہو جائے۔